ایران نے جوہری معاہدے کی کچھ اہم حصے معطل کر دیے،غیر محدود مقدار میں یورینیم افزودہ کرے گا

لندن : ایران نے اپنی قومی سلامتی کونسل کے حکم پر عالمی طاقتوں کے ساتھ 2015کے جوہری معاہدے کے فریم ورک میں رہتے ہوئے اس کے کچھ حصوں سے دستبردار ہونے کا اعلان کر دیا۔

اس اعلان کے ساتھ ہی اس نے ان حصوں کو معطل کر دیا۔ملک کی ایٹمی توانائی تنظیم کے ایک باخبر اہلکار نے کہا کہ ایران نے اس عالمی معاہدے کے کچھ حصوں کو معطل کر دیاہے اور اس پر وہ اب عمل پیرا نہیں رہے گا۔

گذشتہ ہفتہ ایران نے چین، فرانس، جرمنی ،روس اور یو کے کو اپنے اس فیصلہ سے آگاہ کر دیا تھا کہ وہ جوہری معاہدے کی کچھ شقوں پر عمل آوری بند کر دے گا۔

ایران کا یہ فیصلہ جامع ایکشن منصوبہ کے عنوان سے عالمی طاقتوں کے ساتھ ہونے والے جوہری معاہدے سے امریکہ کے باہر ہوجانے اور پابندیوںکے دوبارہ نفاذ کے ایک سال بعدکیا گیا ہے۔

اہلکار نے کہا کہ اب ایران افزودہ یورینیم اور بھاری پانی کی پیداوارکی حد سے مستثنیٰ ہے۔اور اب وہ جتنا چاہے اتنا یورینیم افزودہ کر ےگا ۔

ایران کے ان ابتدائی اقدامات ابھی تک جوہری معاہدے کی خلاف ورزی نہیں کہے جا سکتے۔لیکن ایران نے یہ دھمکی ضرور دی ہے کہ جب تک عالمی طاقتیں 60روز کے اندر امریکی پا بندیوں سے ایران کی اقتصادیات کو تحفظ نہیں دیں گی ایران اونچی سطح پر یورینیم افزودہ کرناشروع کر دے گا۔

یورپی یونین اور جرمنی، فرانس اور یو کے کے وزرا خارجہ نے کہا کہ وہ اب بھی جوہری معاہدے کے پابند ہیں اور ایران کے الٹی میٹم کو قبول نہیںکریں گے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Iran halts some commitments under nuclear deal in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.