امریکہ کی ظالمانہ کارروائیوں سے نمٹنے کے لیے ایرانی پارلیمنٹ میں بل منظور

تہران: ایران کے سرکاری براڈ کاسٹر آئی آر آئی بی کے مطابق ایرانی مجلس کے اراکین نے امریکہ کی دہشت گردانہ اور مہم جویانہ کارروائیوں سے نمٹنے کے لیے پیش کیے گئے بل کے مسودے کو بڑے جوشیلے انداز اور امریکہ مردہ باد کے نعروں کی گونج میں منظوری دے دی۔ایران نے یہ بل ایران کے میزائل پروگرام پر ایران کے خلاف نئی پابندیوں کے حوالے سے اگست کے اوائل میں امریکی کانگریس کے اس بل کے جواب میں لایا گیا ہے جس پر صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے دستخط کیے تھے۔اس بل کی رو سے 52 کروڑ ڈالر کے میزائل پروگرام کو پارلیمنٹ کی منظوری حاصل ہو گئی ہے۔ مجلس شوریٰ کے اسپیکر علی لاریجانی نے دفاعی فنڈ میں اضافہ منظور ہونے کے بعد کہا کہ امریکہ کو جان لینا چاہیے کہ ایران پر عائد کی جانے والی پابندیوں کا پہلا رد عمل کیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ امریکہ یہ جان لے کہ اس کی اس خطے میں دہشت گردی اور مہم جوئی کے خلاف ہم خاموش نہیں بیٹھیں گے۔ ایرانی صدر حسن روحانی بھی کہہ چکے ہیں کہ جوہری معاہدے ختم کیا گیا تو یہ ٹرمپ کی خود کشی کے مترادف ہوگا۔واضح رہے کہ گزشتہ ماہ امریکہ نے میزائل پروگرام کی وجہ سے ایران پر نئی پابندیاں عائد کیں تھیں ، امریکہ کا کہنا تھا کہ انہیں ایران کی سرگرمیوں پر خدشات ہیں۔ امریکی محکمہ خارجہ نے ایران پر الزام عائد کیا تھا کہ وہ مشرق وسطیٰ میں دہشت گردوں کی حمایت کرتا ہے ۔ایران کے نائب وزیر خارجہ عباس عراقچی نے اراکین پارلیماں سے کہا کہ حکومت اس بل کی حمایت کرتی ہے ۔ اور اسے نہایتخوبصورتی اور دانشمندی سے تیار کیا گیا ہے تاکہ ایٹمی معاہدہ کی خلاف ورزی نہ ہو۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Iran eyes more funds for missiles guards after us sanctions in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply