سعودی عرب کسی مسلمان کو حج کے لیے مکہ مدینہ آنے سے نہیں روکتا،حکومت ایران اللہ کوجوابدہ ہوگی

جدہ:وزارتی کونسل نے کہا ہے کہ ایران حج کے لیے اس معاہدہ پر جو عازمین کو بھیجنے والے تمام ممالک کے لیے لازمی ہے،دستخط کرنے سے انکار کر کے حج کو سیاسی رنگ دے رہا ہے۔
وزیر اطلاعات عادل الطریفی نے ایک بیان میں کہا کہ ایرانی حج وفد اور سعودی عرب کی وزارت حج و عمرہ کے درمیان ملاقات سے پید ہونے والے تنازعہ پرخادم حرمین شریفین و فرمانروائے مملکت شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود کی زیر صدارت ہوئے کابینہ اجلاس میں تبادلہ خیال کیا گیا۔
الطریفی نے کہا کہ ایرانی وفد نے اس معاہدہ پر دستخط کرنے سے انکار کر دیا جو رہائش گاہ، ویزا اور دیگر معاملات کے حوالے سے عازمین کے لیے کیے جانے والے انتظامات کے سلسلہ میں ہر ملک سے کیا جاتا ہے۔
انہوں نے کہا اس کا تو کوئی سوال ہی نہیں اٹھتا کہ سعودی عرب کسی مسلمان کو حج کی سعادت ادا کرنے سے روکے ۔انہوں نے مزید کہا کہ سعودی عرب کسی ایرانی عازم حج کو سعودی عرب میں داخل ہونے سے نہیں روکنا چاہتی۔
مملکت کو دنیا بھر سے آنے والے مہمانوں کی میزبانی اور پذیرائی کرنے کا اعزاز حاصل ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت ایران کو اب اللہ کے حضور اور پوری دنیا کے سامنے جواب دہ ہونا پڑے گا اور وضاحت کرنا ہوگئی کہ آخر اس کے وفد کے اراکین نے سعودی وزارت حج و عمرہ سے تبادلہ خیال کے بعد معاہدہ پر دستخط سے کیوں انکار کیا۔

Title: iran blocking its own haj pilgrimseksa | In Category: دنیا  ( world )

Leave a Reply