ایران جوہری معاہدے پر مکمل عمل آوری کر رہا ہے: عالمی ایٹمی ایجنسی سربراہ

تہران:اقوام متحدہ کی ایٹمی ایجنسی کے سربراہ نے کہا ہے کہ ایران تاریخی بین الاقوامی معاہدے کے تحت اپنے ایٹمی پروگرام کو محدود کرنے کے حوالے سے کیے گئے وعدوں پر عمل پیرا ہے۔ جوہری توانائی کی عالمی ایجنسی آئی اے ای اے کے سربراہ یوکیوا امانو کا یہ بیان ایک ایسے وقت میں آیا ہے جب امریکہ اس معاہدہ کو فضول کہہ کر اس معاہدے کی مخالفت کر رہا ہے۔
واضح رہے کہ یوکیوا امانو گذشتہ ہفتہ سے ایران کے خصوصی دورے پر تہران میں ہیں۔انہوں نے ایران کی اعلی حکومتی شخصیات کے علاوہ محکمہ جوہری توانائی ایران کے سربراہ ڈاکٹر علی اکبر صالحی سے بھی اہم ملاقات کر کے ایران اور چھ عالمی طاقتوں کے درمیان طے پانے والے معاہدے اور اس معاہدے میں ایران کے کردار کے حوالے سے تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔ملاقات کے بعد دونوں سربراہان نے مشترکہ پریس کانفرنس سے بھی خطاب کیا جس میں یوکیوا امانو نے کہا ہے کہ ہم اس بات کی تصدیق کر سکتے ہیں کہ ایران نے جامع ایٹمی معاہدے میں جو وعدے کیے ہیں ان پر عمل کر رہا ہے ۔
ڈاکٹر علی اکبر صالحی نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایٹمی معاہدے سے متعلق مشترکہ جامع ایکشن پلان، ایڈیشنل پروٹوکول اور سیف گارڈ کے نظام میں فوجی مراکز کے معائنے کی کوئی شق شامل نہیں ہے اور یوکیا امانو سے ملاقات میں بھی اس موضوع پر کوئی بات نہیں ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ ایران جامع ایٹمی معاہدے کو اہمیت دیتا ہے اور اس کو جاری رکھے جانے کا خواہشمند ہے ۔ اور ہرگز نہیں چاہتا کہ امریکہ اس سے باہر ہو۔
انہوں نے مزید کہا کہ اگر اس جامع ایٹمی معاہدے کی خلاف ورزی کی گئی تو ایران چار دن کے اندر فردو سائٹ میں یورینیئم کی بیس فیصد افزودگی شروع کر سکتا ہے اور ڈیڑھ سال میں اس کو ایک لاکھ ایس ڈبلو یو تک پہنچایا سکتا ہے۔امانو نے ایران کے صدر حسن روحانی اور وزیر کارجہ محمد جواد ظریف سے بھی ملاقات کی ۔صدر کے دفتر سے جاری ایک بیان میں کہا گیا کہ ایران معاہدے کا مکمل پابند ہے اور پابندی کا اپنا وعدہ پوری طرح نبھا رہا ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Iaea chief says iran implementing nuclear related commitments in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply