” زیادہ بچے پیدا کرنے پر سرکاری قرض کی معافی اور ٹیکس سے مستثنیٰ “

نئی دہلی: ہنگری کے وزیر اعظم نے کہا ہے کہ جن خواتین کے چار یا اس سے زائد بچے ہوں گے انہیں تا زندگی آمدنی ٹیکس سے مستثنیٰ کر دیا جائے گا۔

ملک ہنگری میں بچوں کی پیدائش بڑھانے کے لئے منصوبہ کا اعلان کرتے ہوئے وزیر اعظم وکٹر آربن نے کہا کہ تارکین وطن پر انحصار کو کم کرنے اور ہنگری کا مستقبل بچائے رکھنے کا یہی ایک طریقہ تھا۔ دائیں بازو قوم پرست خاص طو ر سے مسلم ممالک سے آ رہے غیر تارکین وطن کی مخالف رہے ہیں۔

واضح ہوکہ ہنگری کی آبادی میں ہر سال 32ہزارنفوس کی کمی واقع ہو رہی ہے اور یورپی یونین کے مقابلے یہاں کی خواتین کے بچوں کی اوسط تعداد کم ہے۔ اقدامات کے طور پر ہنگری کے نوجوان جوڑوں کو تقریباً 26لاکھ روپے کا سود سے پاک قرض (انٹریسٹ فری لون)دیا جائے گا ۔ ان کے تین بچے ہوتے ہی یہ قرض معاف کر دیا جائے گا۔ وزیر اعظم آربن نے کہا کہ مغربی ممالک تارکین وطن کو کم آبادی کے مسئلہ کے حل کے طور پر دیکھتے ہیں۔ ”ہر کھوئے بچے کے لئے ایک بچے کا آنا ضروری ہے اور اس طرح سے آبادی ٹھیک رہتی ہے“۔

انہوں نے کہا ’ ہنگری کے لوگ دوسری طرح سے سوچتے ہیں ،ہمیں آبادی کی نہیں شہریوں کی ضرورت ہے۔‘واضح رہے کہ جب وزیر اعظم آربن اس بارے میں قوم کو خطاب کر رہے تھے تو ملک کی دارلخلافہ بوڈا پیسٹ میں ان پالیسیوں کے خلاف لوگ مظاہرہ کر رہے تھے۔

وزیر اعظم دفتر کے پاس تقریباً 2ہزار سے زائد مظاہرین اسے واپس لیے جانے کا مطالبہ کر رہے تھے۔ملک دوسرے حصوں میں بھی ا س پالیسی کے خلاف مظاہرے ہو رہے ہیں۔قابل غور ہو کہ ہنگری میں خواتین کے اوسطاً 1.45بچے ہیں ،جو کہ یورپی یو نین کے اوسطاً 1.58سے کافی کم ہیں۔ دنیا بھر میں سب سے زیادہ فیرٹیلٹی شرح مغربی افریقہ کے نائیجر کی ہے،یہاں فی خواتین 7.24بچے ہیں۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Hungarian women offered tax breaks loans to marry and have more kids in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.