افغانستان میں طالبان اور داعش کے انتہاپسندوں کے درمیان لڑائی جاری،متعدد ہلاک

کابل: افغانستان کے مشرقی ننگرہار اور کونار صوبوں میں مقامی حکام نے اس امر کی تصدیق کر دی کہ طالبان اور دولت اسلامیہ فی العراق و الشام (داعش) کے انتہاپسندوں درمیان خونریز جھڑپوں میں اضافہ ہوتا جارہا ہے جس کے باعث سیکڑوں خاندان نقل مکانی کر گئے۔

ننگر ہار کے گورنرن کے ترجمان عطاء اللہ نے بھی گذشتہ دوروز کے دوران خوگیانی اور شیر زاد شہروں میں طالبان اور داعش کے انتہاپسندوں کے درمیان خونریز تصادموں اور اس میں متعدد انتہا پسندوں کی ہلاکت کی تصدیق کر دی۔

انہوں نے اس کی بھی تصدقی کی کہ داعش انتہاپسندوں نے طالبان کو زبردست جانی نقصان پہنچانے کے ساتھ ساتھ کئی طالبان انتہاپسندوں کو اغوا بھی کر لیا۔

خوگیانی کے مطابق ان جھڑپوں کے باعث کم ا زکم300خاندان بے گھر ہو گئے۔دریں اثنا کونار صوبہ کے حکام چپہ درہ علاقہ میں طالبان اور داعش کے درمیان اسی قسم کے تصادموں کی تصدیق کی ہے اور بتایا کہ متعدد خاندان نقل مکانی پر مجبورہو گئے۔

کونار صوبہ کے گورنر عبد الستار مرزکوال نے بتایا کہ چپہ درہ علاقہ میں طالبان اور داعش انتہا پسندوں کے درمیان تصادم ابھی تک جاری ہے اور ان تصادموں میں 300خاندان بے گھر ہو گئے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Hundreds of families displaced as clashes intensify between taliban isis in the east in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.