لیبیا میں تارکین وطن سے بھری دو کشتیاں ڈوب گئیں سیکڑوںافراد کی ہلاکت کا خدشہ

روم:لیبیا کے ساحل پر دوکشتیوں کے ڈوب جانے کے باعث سیکڑوں تارکین وطن کی ہلاکتوں کا خدشہ ہے۔ اب تک یہاں سے پانچ لاشیں برآمد کی گئی ہیں ۔ اس علاقے میں کام کرنے والے ایک امدادی گروپ پروایکٹیو اوپن آرمز نے بتایا کہ کل صبح ایک کشتیکے ڈوبنے کے بعد ایک اور کشتی کو ڈوبتے دیکھا گیا تھا۔ ہم نے پانچ لاشیں باہر نکالیں ہیں۔ ادارے کا کہنا ہے کہ جن پانچ لاشوں سمندر سے کو نکالا گیا ہے وہ نوجوان لڑکوں کی ہیں ۔ اٹلی کے ساحلی محافظوں نے بھی پانچ ہلاکتوں کی تصدیق کی ہے۔
پروایکٹیو کی ترجمان لورا لانجا نے کہا کہ کشتیوںکے حجمسے پتہ چلتا ہے کہ ہر کشتی میں سو سے زیادہ افراد سوار ہوں گے۔ امدادی کام میں شامل اٹلی کے کوسٹ گارڈ کے ایک ترجمان نے پانچ لاشیں برآمد ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ لاشوں کو پروایکٹیو گروپ کے جہاز گولفو اجورو پر رکھا گیا ہے اور یہ جہاز کسی بھی ہنگامی صورت حال سے نمٹنے کے لیے یہیں تعینات رہے گا۔ یورپی یونین اور ترکی کے درمیان ایک معاہدے کے بعد یونان جانے جانے والے راستے کو بند کردیا گیا تھا۔
بعد ازاں بڑی تعداد میں تارکین وطن اب بحیرہ روم کے راستے اس طرف آتے ہیں۔ قیام کے لئے بین الاقوامی تنظیم کے مطابق اس سال اب تک بحیرہ روم پار کرنے کی کوشش میں 559 تارکین وطن کی موت ہو چکی ہے وہیں گزشتہ سال کل 5000 تارکین وطن کو اسی کوشش میں اپنی جان گنوانی پڑی تھی۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Hundreds feared dead after boats sink off libyan coast in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News
Tags: , , ,

Leave a Reply