انڈونیشیا میں جکارتہ کے مسیحی گورنر کے خلاف مسلم تنظیمیں جمعہ کو مظاہرہ کریں گی

جکارتہ: انڈونیشیا میں شدت پسند تنظیموں کی قیادت میں مسلمان جمعہ کو جکارتہ کے مسیحی گورنر کو ،جن پر قرآن پاک کی بے حرمتی کا مقدمہ چل رہا ہے،برطرف کرنے کے مطالبہ میں صدارتی محل تک احتجاجی مارچ کرنے کی تیاری کررہے ہیں ۔ جکارتہ کے گورنر کے الیکشن کا دوسرا اور آخری مرحلہ 19 اپریل کو ہے، جس کے پیش نظر مذہبی اور سیاسی کشیدگی اپنے عروج پر ہے۔
موجودہ مسیحی گورنر بسوکی تجاہجا پورناما کے خلاف توہین رسالت کا مقدمہ دائر ہے اور وہ جکارتہ گورنر کے الیکشن میں مسلم امیدواروں کے خلاف تنہا مسیحی امید وار ہیں۔ جمعہ کے روز نماز کی ادائیگی کے بعد ہونے والا مارچ سب سے بڑا احتجاجی مظاہرہ ہونے کی توقع ہے۔ اس سے قبل 15 فروری کو پہلے مرحلے کے الیکشن سے پہلے اس طرح کا مظاہرہ ہوا تھا۔
پولس کے قومی ترجمان رفیع عمار نے بتایا کہ جمعہ کے مظاہرے میں 20 ہزار افراد کے شامل ہونے کی امید ہے، جن میں طلبہ اور متعدد مذہبی و نسلی گروپ شامل ہوں گے۔ مظاہرین استقلال مسجد کے پاس جمع ہوں گے اور صدارتی محل تک مارچ نکالیں گے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Hardline groups plan march against jakartas governor on friday in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply