صدر افغانستان غنی نے پاکستان میں پختون طویل مارچ کی حمایت اور اس سے دہشت گردی کے خاتمہ کی امید ظاہر کی

کابل: صدر افغانستان اشرف غنی نے کہا ہے کہ وہ پاکستان میں پختون طویل مارچ کی حمایت کرتے ہیں ۔اس کے ساتھ ہی انہوں نے یہ امید بھی ظاہر کی کہ ایہ تحریک خطہ سے دہشت گردی کا قلع قمع کرنے میں مددگار ثابت ہوگی۔
صدر غنئی نے ایک ٹوئیٹ میں کہا کہ وہ اس طویل امرچ کی حمایت کرتے ہیں اور اس کا اصل مقصد عوام کو خطہ میں انتہاپسندی اور بنیاد پرستی کے خلاف بیدار کرنا ہے۔صدر غنی نے مزید کہاکہ اس ماعرچ کی ایک تاریخی اہمیت ہے جو ہمیں عدم تشدد کے عظیم محرک بچہ خان کی یاد دلاتی ہے جن کا فلسفہ عدم تشدد کے نظریہ پر مبنی تھا۔
انہوں نے کہا کہ کابل میں دہشت گردانہ حملوں کے بعد ، جس میں زبردست جانی اتلاف ہوا تھا میں نے کہا تھا کہ خطہ کے لوگوں کو دہشت گردی کے خلاف متحد ہوجانا چاہیے اور میں سمجھتا ہوں کہ یہ پختون مارچ اسی صدا کا اثر اور بنیاد پرستی کے خلاف بیداری کی گھنٹی ہے۔
واضح رہے کہ 13جنوری کو کراچی پولس کے ہاتھوں پشتون شخصیت نقیب اللہ محسود کی ہلاکت کے خلاف ردعمل میں پاکستان میں ہزاروںپختونوں نے یہ طویل مارچ کیا۔
واضح رہے کہ پاکستان کی سپریم کورٹ نے نقیب اللہ کی ہلاکت کے معاملہ میں ایک پولس افسر انور راؤکی گرفتاری کے وارنٹ جاری کیے تھے لیکن ایسے اشارے ملے ہیں کہ پاکستانی سپریم کورٹ کا حکم نقار خانہ میں طوطی کی آواز بن کر رہ گئی اور ابھی تک اس کو پولس افسر کو گرفتار نہیں کیا گیا۔
سیاسی حلقوں میں یہ پوچھا جا رہا ہے کہاگر نقیب اللہ کو اس لیے ہلاک کیا گیا کہ اس کے رابطے طالبان سے تھے تو طالبان کے سب سے بڑے حامی اور دہشت گرد تنظیموں جماعت الدعویٰ اور لشکر طیبہ کے سرغنہ حافظ سعید کو کس خوشی میں آزاد چھوڑا گیا ہے اور وہ نہ صرف پورے پاکستان میں بلکہ پاکستان کے زیر انتظام کشمیر میں بھی دندناتا پھرتا ہے۔

Title: ghani supports pashtun long march hopes the protests uproot terrorism | In Category: دنیا  ( world )

Leave a Reply