گھانا یونیورسٹی کیمپس میں ایستادہ مہاتما گاندھی کا مجسمہ ہٹایا جا رہا ہے؟

اکرا: گھانا کی حکومت نے بعض اعتراضات کے پیش نظر گھانا یونیورسٹی کیمپس میںنصب مہاتما گاندھی کے مجسمے کو ہٹا کر کسی دوسری جگہ منتقل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ یونیورسٹی کے کچھ پروفیسروں نے الزام لگایا ہے کہ گاندھی جی متعصب تھے۔ واضح رہے کہ اسی سال جون میں ہی صدر پرنب مکھر جی نے آکر یورنیورسٹی میں گاندھی کے اس مجسمے کا افتتاح کیا تھا اور اسے دونوں ممالک کے قریبی روابط کی ایک علامت قرار دیا گیا تھا۔ گھانا کی حکومت کے مطابق اکراا یونیورسٹی کے کچھ پروفیسرز نے ابھی ستمبر میں ایک پٹیشن جاری کی تھی۔
اس پٹیشن میں گاندھی کے ایک قول کا حوالہ دیا گیا ہے، جس میں انہوں نے انڈیئنز کو مبینہ طور پر سیاہ فام افریقیوں سے بہتر قرار دیا تھا۔ ان پروفیسرز کے بقول گاندھی نسل پرست تھے۔ اور یونیورسٹی میں اّولین ترجیح افریقی قوم کے ہیروز کو دی جانی چاہیے اور ان کے مجسمے نصب کرنے چاہیں یا یادگاریں بنائی جانی چاہییں۔ پٹیشن میں کہا گیا ہے کہ” تیزی سے ترقی کرتی ہوئی کسی یوریشیئن طاقت کی اطاعت کرنے سے بہتر اپنے وقار کی حفاظت کے لیے کھڑے ہونا ہے۔“
گھانا کی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں اس تنازعے پر گہرے خدشات کا اظہار کرتے ہوئے مجسمے کا مقام تبدیل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ”حکومت مجسمے کی حفاظت کو یقینی بنانے اور اس تنازعے کو مزید بڑھنے سے روکنے کے لیے اسے کسی دوسری جگہ منتقل کرنا چاہتی ہے۔“

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Ghana will remove gandhi statue from its oldest university in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply