جرمن پولس نے کرسمس بازار پر حملہ کے الزام میں پکڑ ے جانیوالے پاکستانی کو رہا کر دیا

برلن:جرمن پولیس کا خیال ہے کہ کرسمس بازار پر دہشت گردانہ حملہ کی تحقیقات نے ، جس میں کم از کم12افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہو گئے تھے، اس وقت نیا رخ اختیار کر لیا جب جرمن پولس نے یہ انکشاف کرتے ہوئے کہ جس پاکستانی کو مشتبہ شخص کے طور پر پکڑا گیا ہے وہ اصل سازشی نہیں ہے اسے رہا کر دیا۔ اخبار ڈی ویلٹ نے اعلیٰ سیکوریٹی ذرائع کے حوالے سے یہ اطلاع دی ہے۔ ایک اعلیٰ پولس افسر نے کہا ہے کہ غلط آدمی کو پکڑا گیا ہے جس سے تحقیقات نے ایک نیا موڑ اختیار کر لیا ہے۔اخبار نے ذرائع کے حوالے سے کہا ہے کہ اصل سازشی ابھی تک مفرور ہے اور مسلح ہونے کی وجہ سے وہ مزید نقصان پہنچا سکتا ہے۔
حملے میں ایک ٹرک کا استعمال کیا گیا تھا اور ابھی تک مختلف جرمن ذرائع یہ خبر دے رہے تھے کہ کرسمس مارکیٹ پر ٹرک کے ذریعے حملہ کرنے والا ایک پاکستانی تارک وطن ہے۔ رائٹر کی رپورٹ کے مطابق جرمن اخبار ’بلڈ‘ کا کہنا ہے کہ ” برلن میں واقع کرسمس بازار میں شہریوں کو کچلنے والا مشتبہ ٹرک ڈرائیور 23 سالہ نوجوان ہے جس کا نام نوید ہے اور اس کا تعلق پاکستان سے ہے“۔ جرمن ذرائع نے یہ خبر بھی دی ہے کہ نوید اسی سال فروری میں بطور مہاجر جرمنی آیا تھا اور چھوٹے موٹے جرائم کی وجہ سے پولیس اسے جانتی بھی تھی۔ وہ برلن کے ٹیمپل ہوف نامی متروک ہوائی اڈے پر قائم مہاجرین کے ایک مرکز میں رہ رہا تھا۔
اس واقعے میں پیر کی رات بارہ افراد ہلاک اور اڑتالیس زخمی ہوئے۔ اس دوران جرمن چانسلر انجیلا مرکل نے کہا ہے کہ” جرمنی برلن کے پرتشدد واقعے سے خوف زدہ نہیں ہو گا اور نہ ہی اپنے آزادانہ طرزِ زندگی کو ترک کرے گا۔مرکل کے بقول اس بات کی اجازت نہیں دی جائے گی کہ برے لوگوں کا خوف ہمیں مفلوج کر کے رکھ دے“۔مرکل نے اسے انتہائی کڑا وقت قرار دیا۔مرکل کے مطابق یہ برداشت کرنا اور بھی مشکل ہو گا، جب اس بات کی تصدیق ہو جائے گی کہ حملہ آور ایک ایسا شخص ہے، جس نے جرمنی میں تحفظ اور پناہ کی درخواست دے رکھی تھی۔ جرمن چانسلر کے مطابق اگر ایسا ہوا تو یہ بہت ہی ناخوشگوار ہو گا۔ مرکل نے مزید کہا کہ اس واقعے کی جامع تحقیقات کی جائیں گی اور ذمہ داروں کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا۔
واضح رہے کہ اس سے قبل جرمنی میں ہونے والے متعدد دہشت گردی کے حملوں میں سیکڑوں شہری اور سیکیورٹی اہلکار ہلاک ہوچکے ہیں، جن میں سے بیشتر حملوں کی ذمہ داری داعش کی جانب سے قبول کی گئی۔ برلن میں حملے کے باوجود ملک بھر میں کرسمس بازاروں کو کھلا رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔۔ جرمن حکام کے مطابق یہ فیصلہ داخلہ امور کے وفاقی اور صوبائی وزراء کے مابین ہونے والی ایک ٹیلی فونی گفتگو کے بعد کیا گیا۔ اس دوران سلامتی کے اقدامات کوبھی مزید سخت بنایا جائے گا۔
اس تناظر میں جرمن وزیر داخلہ تھوماس ڈے میزیئر نے کہا کہ اس حملے کے پس منظر اور حملہ آور کے محرکات کے بارے میں آگے چل کر ہمیں جو کچھ بھی معلوم ہو، اس سے قطعِ نظر یہ بات یقینی ہے کہ کوئی ہم سے ہمارا آزادانہ طرزِ زندگی نہیں چھین سکے گا۔ برلن کی ایک کرسمس مارکیٹ میں لگے اسٹالز پر کل رات ٹرک چڑھانے کی کارروائی بظاہر دانستہ کی گئی۔ اس حملے کی تفتیش میں دہشت گردی کا عنصر بھی شامل کر لیا گیا ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Germany releases pakistani held over berlin attack in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply