طالبان افغانستان میں افیم اور ہیروئن کے سب سے بڑے اسمگلر ہیں:امریکہ

واشنگٹن : وہ طالبان جنہوں نے افغانستان میں اپنے دور اقتدار میں افیم کی کاشت پر پابندی عائد کر دی تھی اب جنگ زدہ ملک میں ہیروئن کی پیداوار اور افیم کے فصل پر ان کی زبردست اجارہ داری ہے جس کے باعث انہیں اربوں ڈالرآمدنی ہو رہی ہے۔ اس ضمن میںامریکی وزیر مملکت برائے انسداد منشیات و امور نفاذ قانون ولیم براؤن فیلڈ کا کہنا ہے کہ دنیا بھر میں منشیات کے اصل اور بڑے اسمگلر افغان طالبان ہی ہیں۔ولیم براون فیلڈ نے میڈیا کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ افغان طالبان کی آمدنی کا اہم ترین ذریعہ عالم سطح پر منشیات کی اسمگلنگ ہے۔
انہوں نے کہا کہیہ واضح بات ہے کہ افغان طالبان پوست کی فصل کاشت کرتے ہیں بلکہ پوست کاشت کرنے والوں کسانوں کو سہولیات فراہم کرتے ہیں۔ افغان طالبان بڑے پیمانے پر خود بھی پوست کی فصل کاشت کرتے ہیں اور جو افراد پوست کاشت کر رہے ہیں ، ان سے باقاعدہ ٹیکس وصول کرتے ہیں اور اس کے بدلے میں انہیں سہولتیں فراہم کرتے ہیں۔ مسٹر براؤن فیلڈ نے بتایا ہے کہ افغان طالبان نے بڑے بڑے کارخانے لگا رکھے ہیں جو پوست کو افزودہ کر کے ہیروین بناتے ہیں۔ولیم براؤن نے کہا کہ طالبان تین ہزار پانچ سو ڈالر فی کلو ہیروین بیچتے ہیں جوکہ مغربی ممالک میں جا کر چار ہزار پانچ سو ڈالر تک فروخت ہوتی ہے ۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: From poppy to heroin taliban move into afghanistan drug production in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply