فرانس کے مئیروں نے عدالتی حکم کے باوجود جسم ڈھانپنے والی برکینی پر پابندی اٹھانے سے انکار کر دیا

پیرس : فرانس کے مئیروں کی اکثریت نے پورے جسم کو ڈھکنے والے پیراکی کے لباس ’برکینی‘ پر پابندی، جسے عدالت نے غیر قانونی قرار دے دیا ہے،اٹھانے سے انکار کر دیا۔
جس سے حکومت فرانس مخمصہ میں پڑ گئی ہے کہ وہ اس ضمن میںکہے تو کیا کہے اور کیا موقف اختیار کرے۔ واضح رہے کہ فرانس کی اعلی انتظامی عدالت کونسل آف اسٹیٹ نے جمعہ کو برکینی پر سیاحتی شہر ویلنوے اور بیت کے مئیر وں کے اس حکم کے خلاف فیصلہ سنایا تھا جس میں برکینی پر پابندی عائد کی گئی ہے۔
لیکن وزیر داخلہ برنارڈ کازینونے ایک انٹریو میں کہا کہ اس قانون سے فرقہ وارانہ کشیدگی اور بڑھے گی اس کے علاوہ یہ غیر آئینی اور غیرموثر بھی ثابت ہوگا۔ یہ بات اس سے فرانس کے ان درجنوں شہروں کے لئے مثال قائم ہوگی جنہوں نے برکنی پر پابندی لگادی ہے۔
فرانس میں اگلے برس ہونے والے صدارتی الیکشن سے قبل پارٹی چناؤ کے آغاز پریہ موضوع سیاسی طور پر گرماگیا ہے۔ دائیں بازو کی جماعتوں کے کئی کٹر لیڈر پورا جسم ڈھکنے والے تیراکی کے لباس کو ممنوع قرار دینے کا قانون چاہتے ہیں جو بعض مسلم خواتین پہنتی ہیں۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: French mayors refuse to lift burkini ban despite court ruling in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply