مالدیپ کے سابق صدر مامون عبد القیوم اور چیف جسٹس کو ڈیڑھ سال قید کی سزا

مالے: مادیپ کی ایک عدالت نے سابق صدر مامون عبد القیوم اور موجودہ چیف جسٹس عبد السعید کو انصاف کے عمل میں رکاوٹ ڈالنے کے جرم میں19ماہ قید کی سزا سنادی۔

اس مقدمہ اور سزا کو سیاسی حلقوں میں صدر عبداللہ یامین کے اس منصوبہ کا یک جزو بتایا جارہا ہے جو انہوں نے ستمبر میں ہونے والے انتخابات سے قبل اقتدار پر اپنی گرفت مضبوط کرنے کے لیے یامین نے بنارکھا ہے تاکہ وہ آئندہ پانچ سالہ میعاد کے لیے منتخب ہو سکیں کیونکہ مامون عبد القیوم کے جیل چلے جانے کے بعد حزب اختلاف جو ابھی تک اپنا متفقہ امیدوار نہیں چن سکی ہے، کمزور ہوجائے گی ۔

4لاکھ نفوس پر مشتمل آبادی والا اور سیاحوں میں نہایت مقبول یہ چھوٹا سا ملک مالدیپ 2012سے ہی جب سے جمہوری طرز سے منتخب محمد ناشید کو معزول کیا گیا ہے سیاسی بحران میں مبتلا ہے۔ناشید کو 2015میں دہشت گردی کا مجرم قرار دے کر13سال کے لیے داخل زنداں کر دیا گیا تھا۔

ملک پر سب سے زیادہ لمبی مدت تک حکمرانی کرنے والے عبدالقیوم ، چیف جسٹس عبد اللہ سعید اور سپریم کورٹ کے جج جسٹس علی حمید کو پولس تفتیش کے دوران اپنے موبائل فون دینے سے انکار کرنے کے جرم میں19ماہ6روز کی قید کی سزا سنادی گئی ۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Former president maldives and chief justice sentenced for obstruction of justice in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply