ہلمند میں تین روز کے دوران درجنوں افغان فوجی و پولس اہلکار ہلاک

لشکر گاہ: سرکاری ذرائع کے مطابق جنوبی ہلمند صوبہ میں اتوار سے اب تک درجنوں فوجی و پولس اہلکار طالبان کے حملوں میں مارے جا چکے ہیں۔تین مقامی اہلکاروں نے ، جو اپنے افسران بالا کی جانب سے ہلاک شدگان کی تعداد کے بارے میں زبان نہ کھولنے کے حکم کے باعث اپنا نام مخفی رکھنے کی شرط پر بات کر رہے تھے،کہا کہ صوبہ میں اتوار کے بعد سے مختلف وارداتوں میں 25فوجی اور27پولس اہلکار ہلاک ہو چکے ہیں۔ 2014میں بین الاقوامی فوجوں کے انخلا کے بعد سے افغان سیکورٹی فورسز تن تنہا اپنے بل پر طالبان سے لڑ رہی ہیں اور ہلمند میں، جہاں طالبان نے کئی برس کی لڑائی کے دوران سیکڑوں ناٹو فوجی ہلاک کر دیے تھے،بغاوت کچلنے کے لیے مہینوں سے جد وجہد کر رہی ہیں۔ہلمند میں جنگ کے ساتھ ساتھ طالبان شمالی صوبوں جوز جان، قندوز اور بغلان میں بھی انتہا پسندانہ کارروائی کر رہے ہیںاور حالیہ دنوں میں حکومتی فورسز پر زبردست حملے کیے ہیں جس میں بھاری جانی نقصان اٹھانا پڑا ہے۔اس ہفتہ ہلمند میں ایک اور بدترین واردات ہوئی جس میں سنگین منقطہ میں خود کش حملہ کر کے دھماکہ خیز مواد سے بھری فوجی گاڑیوں کو ایک چوکی سے ٹکرادیا جس میں سات فوجی اور15پولس اہلکار ہلاک ہو گئے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Fifty two afghan soldiers and police officials killed in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply