عراق کے پارلیمانی انتخابات میںڈھائی ہزار سے زائدخواتین امیدوار

بغداد: عراق میں12مئی کو پارلیمانی انتخابات ہو رہے جس میں ووٹرز 329امیدواروں کا انتخاب کریں گے۔ واضح ہو کہ 2003میں امریکی حملے میں صدام حسین کی حکومت کا تختہ پلٹنے کے بعد چوتھی بار پارلیمانی انتخابات ہو رہے ہیں۔کئی برسوں بعد آج عرق میں سلامتی کی صورت حال بہت بہتر ہے اور خواتین امیدواروں کی نئی نسل ان انتخابات میں زبردست دلچسپی لے رہی ہے۔پورے ملک اور بغدادمیں 2592خواتین الیکشن کی دوڑ میں ہیں ۔ان میں سے بہت سی خواتین نے سماجی طور پر آزاد اور کبھی کبھار ملک کی فرسودہ روایات کو پس پشت ڈال کر مسحور کن انتخابی مہم چلائی۔جوکہ اس سے قبل عراق میں کبھی دیکھنے میں نہیں آئی تھیں۔کچھ پوسٹروں میںخاتون امیدوار میک اپ میں اور اسلامی اسکارف کے بغیر ہیں ۔ جس پر ملا جلا ردعمل دیکھنے میں آرہا ہے۔کچھ ووٹروں کا کہنا ہے کہ ابھی تک انتخابی مہم کے دوران خشک، مردغلبہ والی فرسودہ انتخابی مہم میں خوش آئند تبدیلی ہے جبکہ کچھ ووٹروں نے خواتین پر الزام لگایا کہ ان میں سیاسی بصیرت ،سمجھ اور گہرائی نہیں ہوتی وہ عوام کو اپنی طرف متوجہ کرنے لیے حسن و زیبائش پر انحصار کرتی ہیں۔ عراقی خبر رساں ایجنسی المنار پریس کو ایک انٹرویو میں ایک خاتون امیدوارمنال المعتصم نے کہا کہ انہیں امید ہے کہ ان کی فیشن ایبل تصویر مزید نوجوان لڑکوں کو انتخابات میں ان کی حمایت کرنے پر اکسائے گی۔ انہوں نے کہا کہ وہ سمجھتی ہیں کہ عراقی ووٹرز پرانے چہرے اور پرانی سیاست دیکھ دیکھ کر عاجز آچکے ہیں اور اب وہ نئے چہروں کی تلاش میں ہیں اس لیے کوئی انتخابی پروگرام یا نعروں کی ضرورت نہیں ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Female candidates shake up iraq election in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply