سعودی صحافی کو قونصل خانہ میں بڑی سفاکی سے قتل کیا گیا تھا: ترک صدراردوغان کا بیان

انقرہ: سعودی صحافی جمال خاشق جی کو قتل کرنے کے سعودی عرب کے منصوبہ کی کھلی سچائی سامنے لانے کا وعدہ کرنے والے ترک صدر رجب طیب اردوغان نے منگل کے روز پارلیمنٹ میں اراکین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ خاشق جی کو استنبول میں واقع سعودی قونصل خانہ میں بڑی بے رحمی سے قتل کیا گیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ خاشق جی کو قتل کرنے کے کے مشن پر سعودی جنرلوں سمیت 15رکنی ٹیم ترکی روانہ کی گئی تھی۔اردوغان نے کہا کہ بلا شبہ یہ واردات ایک قونصل خانہ کی عمارت میں ہوئی جو سعودی عرب کی سرزمین کہلائی جا سکتی ہے لیکن یہ بھی سچ ہے کہ وہ زمین ہے تو ترکی کی سرحد کے اندر ہی۔

مسٹر اردوغان نے کہاکہ ویانا کن ون شن اس قتل کی تحقیقات استثنیٰ کی آڑ میں چھپانے کی اجازت نہیں دے سکتی۔ اردوغان نے سعودی عرب کے شاہ سلمان سے کہا کہ وہ 18سعودی مشتبہ لوگوں پر خاشق جی کے قتل کو مقدمہ ریاض یا سعودی عرب کے کسی حصہ میں نہیں استنبول میںچلائیں ۔

اردوغان نے کہا کہ بے رحمی کے ساتھ بنائے گئے منصوبہ کے تحت قتل کیا گیا۔اور ان کے قاتلوں اور قتل کی منصبہ بندی کرنے اور سازش رچنے والوں کو بھی نہ بخشا جائے اور انہیں پہلی فرصت میں کیفر کردار تک پہنچایا جائے۔

اردوغان نے کہا کہ کیمرہ فوٹیج سے علم ہوا کہ خاشق جی قونصل خانہ میں تو داخل ہوئے لیکن وہاں سے باہر نہیں نکلے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Erdogan calls for trial in istanbul of khashoggi suspects terms death premeditated murder in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply