مسلح تصادم میں مصری سلامتی دستوں نے اخوان المسلمون کے8ارکان کو ہلاک کر دیا

قاہرہ: مصری وزارت داخلہ کے مطابق مصری فورسز نے پیر کے روز ملک کے جنوب میں اخوان المسلمون کے ساتھ ایک مسلح تصادم میں اس کے 8 ارکان کو ہلاک کر دیا۔ ہلاک ہونے والے 8 ارکان میں اخوان المسلمون کے اہم رہنما حلمی سعد مصری بھی شامل ہیں۔مصری میڈیا کے مطابق مصری فورسز نے اخوان المسلمون کے 8 ارکان کو جن میں اخوان المسلمون کے سرکردہ رہنما ہلمی سعد مصری بھی شامل تھے، مبینہ تصادم میں ہلاک کر دیا ہے ۔
مبصرین کا کہنا ہے کہ مصری فورسز نے ان افراد کو ملک کے جنوبی علاقے میں فرضی آپریشن کے دوران قتل کیا ہے۔ اس کے علاوہ مصری عدالت نے اخوان المسلمون کے سربراہ محمد البدیع سمیت 3 رہنماؤں کو عمر قید کی سزا سنائی ہے جبکہ محمد البدیع کو پہلے سزائے موت سنادی گئی تھی۔واضح رہے کہ سال 2013 میں اخوان المسلمون کے صدر محمد مرسی کی معزولی کے بعد صدر عبدل فتاح السیسی کے حکم پر مصری سیکیورٹی فورسز نے اس تنظیم کے خلاف شدید ترین کریک ڈاؤن شروع کر رکھا ہے۔
یہی نہیں بلکہ مصر نے اخوان المسلمون کو گزشتہ برس کالعدم تنظیم قرار دے دیا تھا، جس کے بعد سے مصری فوج فرضی مقابلوں میں اخوان المسلمون کے ارکان کو جیلوں سے نکال کر قتل کررہی ہے۔

Title: egyptian security forces kill 8 muslim brotherhood members in shootout | In Category: دنیا  ( world )

Leave a Reply