ریاض میں مصری نژاد شہری سعودی عرب کے ہی میزائل کی زد میں آکر ہلاک ہوگیا

تہران: اتوار کو یمن سے کیے گئے میزائل حملہ میں 38سالہ عبدالمطلب احمد حسین علی کی ہلاکت کے حوالے سے کہا جا رہا ہے کہ وہ حوثیوں کے میزائل سے نہیں بلکہ خود سعودی عرب کے میزائل سے ہلاک ہوا ہے۔
بتایا جاتا ہے کہ اتوار کی شب ریاض کو نشانہ بنا کر یمن سے داغے گئے میزائل کو روکنے کے لیے سعودی عرب کے فضائی دفاعی نظام سے جو میزائل چھوڑا گیا تھا وہ راستہ بھٹک کر ریاض کے رہائشی علاقوں سے آکر ٹکرا گیا۔ یمن میںسعودی قیادت والے اتحاد کے ترجمان کرنل ترکی المالکی کے مطابق یمنی میزائل ریاض سے35کلومیٹر کی دوری پر واقع کنگ خالد انٹرنیشنل ہوائی اڈے کونشانہ بنا کر چھوڑا گیا تھا۔
سعودی ایر ڈیفنس سسٹم راڈار اسکرین پر دشمن کے میزائل کو اس وقت دکھا سکا جب وہ ہوائی اڈہ کو نشانہ بنانے کےلیے ریاض پر پرواز کرنے لگا جبکہ دفاعی سسٹم کو اس میزائل کو ملک کی فضائی حدود میں داخل ہونے کے بعد ریاض ہوائی اڈے سے 100کلومیٹر دور ہی روک دینا چاہیے تھا ۔سعودی حکام نے دعویٰ کیا تھا کہ ملک کے میزائل نظام نے چھوڑے گئے ساتوں میزائلوں کو راستے میں روک کر تباہ کر دیا گیا لیکن ویڈیو فوٹیج سے اس دعوے کی تردید ہو جاتی ہے ۔
فوٹیج میں صاف نظر آرہا ہے کہ سعودی عرب کے پیٹریاٹ ایر ڈیفنس سسٹم میں خرابی آگئی اور سعودی میزائل حملہ آور میزائل کو روکنے کے بجائے پلٹ کر ریاض کے رہائشی علاقوں میں فضا میںہی پھٹ گیا اور تپتے ہوئے لوہے کی ٹکڑے آسمان سے برسنا شروع ہو گئےجس کی زد میں مصری مزدور ہلاک اور متعدد شہری زخمی ہو گئے۔

Title: egyptian killed by malfunctioning saudi missile defense shield strike | In Category: دنیا  ( world )

Leave a Reply