عراق کے قائم شہر پر بمباری میں درجنوں شہری ہلاک

بغداد،: عراقی مغربی سرحد پر واقع شہر قایم پر بدھ کو کی جانے والی بمباری میں کم از کم 60افراد ہلاک ہو گئے جس میں اکثریت بیشتر عام شہریوں کی ہے۔ عراق کی پارلیمنٹ کے اسپیکر نے اس حملے کی تحقیقات کرائے جانے کامطالبہ کیا ہے۔ اسپتال کے ذرائع نے بتایا کہ ہلاک شدگان میں12 خواتین اور19 بچے شامل ہیں۔ یہ حملہ شام کی سرحد کے نزدیک دولت اسلامیہ فی العراق و الشام (داعش) کے قبضے والے قایم قصبے میں کیا گیا۔داعش کے خلاف جنگ میں عراق کی فوج کی حمایت کرنے والے امریکی اتحاد کے ترجمان نے بتایا کہ قایم قصبے پر حملہ اس کے طیاروں نے نہیں کیا۔داعش کی خبر رساں ایجنسی عماق نے اس حملے کے لئے عراقی فضائیہ کو قصوروار ٹھہرایا ہے۔ شیعہ حکومت والے عراق کے سب سے قابل احترام سنی سیاست داں زبوری نے کہا کہ یہ حملہ شہریوں کو نشانہ بناکر کیا گیا اور اس کا نشانہ ایک بازار کو بھی بنایا گیا۔ ا جس میں درجنوں افراد جاں بحق اور کثیر تعداد میں لوگ زخمی ہوگئے۔قائم قصبہ مغربی صوبہ میں واقع ہے اور اس میں بیشتر آبادی سنی مسلمانوں کی ہے۔ عماق نیوز ایجنسی نے حملے کے بعد فوٹیج جاری کیا ہے جس میں بازار کی دکانیں اور منی بسوں کو جلتے دیکھا گیا ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Dozens killed in west iraq air strike mps and medics say in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply