ہلیری کلنٹن اور ڈونالڈ ٹرمپ نے ایک دوسرے کی قوت ارادی کو چیلنج کیا

واشنگٹن:ڈیموکریٹک صدارتی امیدوار ہیلری کلنٹن اور ری پبلیکن پارٹی کے امیدوار ڈونالڈ ٹرمپ نے اتوار کی رات ریاست مِزوری کے شہر، سینٹ لوئس میں واقع واشنگٹن یونیورسٹی میں منعقدہ دوسرے صدارتی مباحثے کے دوران مختلف معاملات پر ایک دوسرے کی پارٹی پالیسیوں اور حکمت عملی کو چیلنج کیا، اور میزبانوں اور ووٹروں کے سوالات کے جواب دیے۔ دونوں امیدواروں نے ایک دوسرے کے اخلاقی اقدار، سمجھ بوجھ، کارکردگی اور عزم پر سوال اٹھائے؛ اور ساتھ ہی ملکی سکیورٹی میں بہتری لانے، داعش کے انسداد، انتہا پسندی اور شدت پسندی کے خاتمے اور تجارت کے فروغ کے لیے عملی اقدام کا عزم کیا۔
مسلمانوں کے بارے میں پوچھے گئے ایک سوال پر، ٹرمپ نے کہا کہ صدر منتخب ہونے پر وہ مسلمانوں کے داخلے کے بارے میں سخت پوچھ گچھ کی پالیسی پر عمل پیرا ہوں گے۔ انھوں نے کہا کہ اس کی ضرورت اس لیے پیش آ رہی ہے چونکہ ایسے افراد کو امریکہ نہ آنے دیا جائے جو ”سخت گیر اسلامی نظریات” میں یقین رکھتے ہیں، جو بات امریکی اقدار سے متصادم ہے۔ ساتھ ہی ٹرمپ نے کہا کہ ضرورت اس بات کی ہے کہ امریکہ میں رہنے والے مسلمان شدت پسندی کے بارے میں قانون کے نفاذ سے وابستہ اہل کاروں کو بروقت اطلاع دیں تاکہ شدت پسندی کے واقعات سے بچا جا سکے۔ انہوں نے ہیلری کلنٹن اور اوباما پر الزام لگایا کہ وہ ’شدت پسند اسلام‘ کا لفظ استعمال نہیں کرتے، جب کہ، بقول ان کے، ’ایک حقیقت ہے‘۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Donald trump and hillary clinton just said something nice about each other in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply