جدہ میں امریکی قنصل خانہ پر حملہ کرنے والا خود کش بمبار ہندوستانی تھا پاکستانی نہیں:سعودی عرب

ریاض: سعودی عرب نے ہندوستان کو مطلع کیا ہے کہ ڈی این اے جانچ سے اس بات کی تصدیق ہو گئی ہے کہ 2016میں جدہ میں امریکی قونصل خانہ کے باہر ناکام خود کش حملہ میں ملوث بمبار پاکستانی نہیں بلکہ ہندوستانی تھا۔ واضح ہو کہ اس سے پہلے یہ شبہ ظاہر کیا جا رہا تھا کہ یہ بمبار پاکستانی شہری ہے۔ لشکر طیبہ کا ایک نہایت مطلوب دہشت گرد اور ابو جندال کا قریبی ساتھی فیاض کاغذی نے دو سال پہلے خود کا جدہ میں امریکی قونصل خانہ کے باہر ایک ناکام خود کش حملے میں خود کو دھماکہ سے اڑا لیا تھا۔شروع میں سعودی حکام نے کاغذی کی شناخت عبداللہ قلزار خان نا م کے ایک پاکستانی کے طور پر کی تھی ۔تاہم مہارشٹر انسداد دہشت گردی اسکواڈ (اے ٹی ایس)نے تحقیقات کی تو پتہ چلا کہ وہ فیاض کاغذی ہے جو 2010میں پنے میں جرمن بیکری دھماکہ اور 2006کے اورنگ آبا د اسلحہ ذخیرہ کیس میں مطلوب ہے۔اے ٹی ایس اور قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے) نے سعودی عرب سے اطلاعات کا اشتراک کیا اور کاغذی کے خاندان کے ڈی این اے کے نمونے لیے۔ جس کے بعد سعودی عرب نے تصدیق کر دی کہ بمبار بلا شبہ مہاراشٹ میں بیڑ کا رہائشی کاغذی ہے۔ این آئی اے کے ایک سینیئر اہلکار نے بتایا کہ ہم نے نئی دہلی میں حال ہی میں پٹیالہ ہاو¿س کورٹ کو مطلع کیا ہے کہ کاغذی ہلاک ہو چکا ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Dna tests show 2016 jeddah bomber was indian says saudi arabia in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply