جاپان میں بارشوں اور چٹانیں کھسکنے سے ہلاک شدگان کی تعداد بڑھ کر120ہو گئی

ٹوکیو: مغربی جاپان میں کئی روز سے جاری طوفانی بارشوں اور چٹانیں کھسکنے سے ہلاک شدگان کی تعداد بڑھ کر 120ہو گئی جبکہ متعدد ابھی لاپتہ ہیں۔ حالات اتنے خراب اور تباہ کن نظر آرہے ہیں کہ حکومت کو اسے بھیانک تباہی کے طور پر تسلیم کرنا پڑا۔

سرکاری نشریہ این ایچ کے میں صبح دس بجے کے نیوز بلیٹن میں بتایا گیا کہ 123افراد کی ہلاکت کی تصدیق ہو چکی ہے۔ نشریہ میں یہ بھی بتایا گیا کہ لاکھوں افراد بے گھر ہو چکے ہیں۔

وزیر اعظم شین زو آبے نے 1983کے بعد سیلاب سے اب تک کی سب سے بڑی تباہی سے نمٹنے کے اقدامات کا جائزہ لیتے رہنے کے پیش نظر بلجیم، فرانس ،سعودی عرب اور مصر کا اپنا8روزہ سرکاری دورہ منسوخ کر دیا۔سیلاب کا پانی اس طرح پھیل گیا ہے کہ سیکڑوں افراد ابھی تک گھروں سے باہر نہیں نکل سکے ہیں۔

سیلاب کے پانی نے سڑک تک پہنچنے کے تمام راستے مسدود کر دیے ہیں اور اس پانی کابہاو¿ بھی اس قدر تیز ہے کہ اس میں کشتیاں اور لائف بوٹ بھی بے قابو ہو کر پانی کے بہؤ پر چل رہی ہے۔

اگرچہ مطلع صاف ہو چکا ہے اور دھوپ نکھری ہوئی ہے لیکن محکمہ موسمیات نے انتباہ دیا ہے کہ کیچڑ کے بہہ کر آنے کا ابھی خطرہ ٹلا نہیں ہے۔پولس افسران، فائر فائیٹرز اور سیلف ڈیفنس فورس کے جوان سمیت 74ہزار سے زائد بچاو¿ عملہ سیلاب میں پھنسے لوگوں کو بچانے کی جدو جہد میں لگا ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Death toll in western japan rain deluge tops 120 in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply