داعش کے کمزور پڑجانے کے باوجود دہشت گرد تنظیم سے خطرہ ہنوز برقرار:اوبامہ

واشنگٹن: امریکی صدر با رک اوباما نے کہا ہے کہ دہشت گرد تنظیم دولت اسلامیہ فی العراق و الشام ( داعش) کے خلاف اتحادی ممالک کے ساتھ مل کر جو جنگ چھیڑی گئی ہے، اس سے یہ تنظیم پہلے سے کمزور ہوئی ہے لیکن اس کا خطرہ برقرار ہے۔
مسٹر اوباما نے پنٹاگن میں اعلی سطح کے سکیورٹی حکام کے ساتھ میٹنگ کے بعد نامہ نگاروں سے یہ بات کہی۔ انہوں نے کہا کہ شام اور عراق میں داعش کی پکڑ کمزور ہوئی ہے لیکن دنیا کے دیگر علاقوں میں اس کے حملے بڑھ گئے ہیں۔ وہ بین الاقوامی دہشت گرد تنظیم القاعدہ کی طر ح حملوں کو انجام دے رہی ہے۔
مسٹر اوباما نے کہاکہ انہیں اس بات کی خوشی ہے کہ ہم عراق اور شام میں داعش کے خلاف جنگ میں کامیاب ہوئے ہیں لیکن ہمیں ابھی موصل اور الرقہ کو ان سے آزاد کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمیں اس کے خلاف جنگ میں کامیابی مل رہی ہے۔ لیکن دنیا کے مختلف ممالک میں ان کی انٹیلی جنس شاخ سے خطرہ ہے۔ انہوں نے فرانس، جرمنی، بنگلہ دیش سمیت کئی ممالک میں حملے کئے ہیں جو تشویشناک ہے۔
مسٹر اوباما نے کہا کہ لیبیا میں داعش کے بڑھتے اثرات سے اتحادی ملک آگاہ ہیں۔ تاہم انہوں نے اس بات کی تردید کی کہ امریکی قیدیوں کو داعش کے قبضے سے بازیاب کے لئے جنوری میں عراق کو پیسے دیے گئے تھے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Daesh still a threat to the world obama in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply