نکاح متعہ سے انکار کرنے پر داعش نے250خواتین کو موت کے گھاٹ اتار دیا

سنجار(عراق): دولت اسلامیہ فیالعراق و الشام (داعش)نے اپنے جہاد نکاح کے تحت نکاح متعہ سے انکار کرنے والی 250خواتین کو سزائے موت دے دی۔مقتول خواتین کو حکم دیا گیا تھا کہ وہ داعش کے گڑھ شمالی عراق میں لڑ رہے دہشت گردوں سے عارضی نکاح کر لیں۔لیکن جب ان خواتین نے ا اس نام نہاد نکاح جہاد سے انکار کیا تو انہیں ہلاک کردیا گیا اور کئی بار ان کے لواحقین کے سامنے ہی انہیں قتل کر دیا گیا۔
کرد جمہوری پارٹی کے ایک اہلکارسعید ماموزینی نے کہا کہ نکاح جہادکی رسم قبول کرنے سے انکار کرنے پر موصل شہرمیں داعش کے انتہاپسنداب تک کم از کم 250عورتوں کو تہ تیغ کر چکے ہیں اور کچھ معاملات میں تو داعش کی استدعا نہ ماننے پر لڑکیوں کا پورا کا پورا خاندان ہی ہلاک کر دیا گیا۔موصل 2014سے داعش انتہاپسندوں کے زیر تسلط ہے۔اکتوبر میںیہ انکشاف ہوا تھا کہ داعش انتہاپسندوں نے اگست2014میں سنجار خطہ پر حملہ کر کے 500سے زائد یزیدی عورتوں اور نوجوان بچیوںکواغوا اور5ہزار سے زیادہ مردوں کوہلاک کر دیا تھا۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Daesh execute 250 women in mosul for refusing to become sex slaves in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply