داعش سے وابستہ افغان دہشت گردوں نے امریکی ہتھیار ہاتھ لگنے کا دعویٰ کیا

اسلام آباد: دولت اسلامیہ فی العراق و الشام (داعش) سے وابستہ مشرقی افغانستان کے دہشت گردوں نے دعویٰ کیا ہے کہ انہوں نے امریکی فوجیوں کے وہ ہتھیار حاصل کر لیے ہیں جو وہ جنگ کے دوران چھوڑ گئے تھے۔
انہوں نے اپنے اس دعوے کی تصدیق کے لیے ان ہتھیاروں کی تصاویر بھی جاری کی ہیں۔ پاکستانی اخبار ڈان کی خبر کے مطابق دہشت گردوں نے جو فوٹو جاری کیے ہیں وہ پورٹیبل راکٹ لانچر، ریڈیو اورگرینیڈ سمیت دیگر ہتھیاروں کے ہیں جن کا استعمال عام طور پر افغانستان کےفوجی نہیں کرتے۔ ان ہتھیاروں کے ساتھ دہشت گردوں نے ایک امریکی فوجی ماہر ریان لارسن کا شناختی کارڈ بھی جاری کیا ہے۔
کابل میں امریکی فوجی کمان نے دہشت گردوں کے دعوے کی تردید کی اور کہا کہ اس کے تمام فوجی اپنی ڈیوٹی پر تعینات ہیں۔ افغانستان میں امریکہ کے خصوصی فوجی دستہ افغانستان کے فوجیوں کے ساتھ داعش سے وابستہ دہشت گردوں کے خلاف ننگرہار صوبے میں جنگ لڑ رہا ہے۔ جولائی میں اس صوبے میں امریکہ کے پانچ فوجی زخمی ہو گئے تھے۔
جس ویب سائٹ نے امریکی ہتھیاروں کے فوٹو جاری کئے ہیں وہ ان ہتھیاروں کے ہیں جو جنگ کے دوران چھوڑے گئے تھے۔ امریکی فوج کے ترجمان نے بتایا کہ ان ہتھیاروں کے بارے میں تحقیقات کی جا رہی ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Daesh claims seizing us weapons in nangarhar afghanistan times in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply