چین نے مسلم علیحدگی پسند وں کے خلاف جنگ میں تعاون کے لئے افغانستان کا شکریہ ادا کیا

بیجنگ: چین نے شین جیانگ کے علیحدگی پسندوں کے خلاف جنگ میں تعاون دینے پر افغانستان کا شکریہ ادا کیا۔ اس ضمن میں چینی وزیر دفاع چانگ وان گوان نے افغان فوجی سربراہ قدم شاہ شاہیم سے مل کر مسلم علیحدگی پسند تنظیم کے خلاف لڑنے میں کابل حکومت کی حمایت کا شکریہ ادا کیا ہے۔ چین اسے انتہاپسند گروپ قرار دیتا ہے جو مغربی خطہ شین جیانگ کو علیحدہ کرنا چاہتا ہے۔
چین کو عرصہ سے اس بات کی تشویش ہے کہ افغانستان کا عدم استحکام مسلم ایغور لوگوں کے علاقہ شورش زدہ شین جیانگ تک نہ پھیل جائے جہاں حالیہ برسوں میں سیکڑوں لوگ مارے جاچکے ہیں۔ وہاں پھیلی بے چینی و اضطراب کے لئے حکومت مسلم شدت پسندی کو ذمہ دار قرار دیتی ہے جبکہ ایغور لوگوں کا کہنا ہے کہ حکومت انہیں کچلنا چاہتی ہے اور انکے خلاف کارروائی کرتی رہتی ہے ان پر کئی طرح کی مذہبی اور ثقافتی پابندیاں بھی لگی ہوئی ہیں۔
ادھرامریکہ اور اقوام متحدہ نے مشرقی ترکستان تحریک (ای ٹی آئی ایم ) کو دہشت گرد گروپ قرار دے رکھا ہے حالانکہ بہت سے ماہر ین اس پر سوال اٹھاتے ہیں ان کا کہنا ہے کہ چین نے شین جیانگ کے لوگوں پر جس طرح کی پابندیاں لگا رکھی ہیں ان کی وجہ سے وہاں بے چینی ہے۔ وزیر دفاع چانگ وان گوان نے نے افغان فوجی سربراہ قدم شاہ شاہیم سے کہا ”ہم ترکستان تحریک سے لڑنے اور چین کے اہم مفادات کے معاملہ میں افغانستان کی قیمتی حمایت کے شکر گذار ہیں۔
چانگ نے کہا”مجھے امید ہے کہ دونوں فوجیں اس تعاون کو مزید آگے بڑھا سکتی ہیں جس سے دونوں ملکوں کی سیکورٹی کا تحفظ ہوگا اور مشترکہ ترقی کے لئے سازگار ماحول تیار ہوگا۔مسٹر شاہم نے کہا ”افغانستان ترکمانستان تحریک کے خلاف آئندہ بھی لڑتا رہے گا اس کے لئے ہم عملہ کی تربیت اور مشترکہ مشقیں اور دیگر وسیلوں سے تعاون کو فروغ دیں گے۔
ادھر چین پاکستان اور امریکہ کے ساتھ مل کر افغانستان میں 15 سال سے جاری طالبان بغاوت کو فروکرنے کے لئے امن مذاکرات کرانے کی کوشش کررہا ہے۔ مگر یہ کوشش بار آور ثابت نہیں ہوئی ہیں۔ مئی میں طالبان رہنما ملا محمد اکبر منصور کی امریکی ڈرون حملے میں ہلاکت کے بعد یہ بات چیت بالکل ٹوٹ گئی ہے۔
طالبان کے اندرونی ذرائع نے رائٹر کو بتایا ہے کہ طالبان کے ایک وفد نے اس ماہ کے اوائل میں چین کا دورہ کیا تھا تاہم چینی افسران نے اس کی تصدیق نہیں کی ہے۔ چین کا کہنا ہے کہ 2014کے اختتام پر ناٹو فوجوں کے انخلا سے افغانستان میں سالمیت کے حوالے سے جو خلا پیدا ہوا ہے اسے پرکرنے کی چین نے کبھی خواہش ظاہر نہیںکی لیکن اس نے ملک کی نوتعمیر میں مددد ینے کے لیے زبردست معاشی کردار ادا کرنے کا ضروروعدہ کیا ہے۔ (رائٹر)

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: China praises afghanistan for fight against chinese separatist group in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply