ہانگ کانگ قانون ساز کونسل کے نو منتخب ممبران نے چینی ظلم و ستم ختم کرنے کی قسم کھائی

ہانگ کانگ:چین سے الگ ہونے کی ہانگ کانگ کی لڑائی کو اس وقت نئی مضبوطی ملی جب مقامی قانون ساز کونسل کے لئے منتخب کردہ جمہوریت حامی لیڈروں نے حلف کے دوران چینی ظلم و جبر ختم کرنے کا عہد کیا۔
اس دوران کچھ ارکان آزادی کی لڑائی کی شناخت زرد چھتری لے کر حلف لینے پہنچے تھے۔وہیں کچھ کے ہاتھ میں ’ہانگ کانگ چین کا حصہ نہیں‘ لکھا بینر تھا۔حلف میں اس بات کا بار بار ذکر رہا کہ ہانگ کانگ چین کے خاص انتظام والا خطہ ہے۔ لیکن، نو منتخب ارکان نے جتنی بار چین کا نام لیا اس کا تلفظ غلط طریقے سے کیا۔
چین کی وارننگ کو نظر انداز کرتے ہوئے ایسا کیا گیا۔ ہانگ کانگ میں مقامی الیکشن گزشتہ ماہ ہوا تھا۔ اس میں ریکارڈ پولنگ ہوئی تھی اور کئی ایسے لوگوں نے جیت حاصل کی تھی جو 2014 کی جمہوریت نواز تحریک کا چہرہ تھے۔ واضح رہے کہ برطانیہ نے 1997 میں چین کو ہانگ کانگ سونپ دیا تھا۔
’ایک ملک ایک نظام‘ پالیسی کے تحت فی الحال یہ شہر نیم خود مختار ہے۔ اس پالیسی کے مطابق ہانگ کانگ 50 سال تک چین سے الگ نہیں ہو سکتا۔لیکن چین کی بڑھتی مداخلت کے درمیان ہانگ کانگ میں آزادی کی مانگ بھی اتنی ہی زور پکڑتی جا رہی ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: China is snubbed by hong kong legislators at their oath taking in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply