چینی آبی خطے میں غیر قانونی طور پر ماہی گیری کرنے والوں کو جیل

بیجنگ:چین کے سپریم کورٹ نے آج فیصلہ کیا کہ چین کے سمندری علاقے میں غیر قانونی طور پر مچھلی پکڑنے والو کو ایک سال کی قید کی سزا دی جا سکتی ہے۔
چین کے سپریم کورٹ کا یہ فیصلہ چین کے سمندر ی علاقے پر جس میں اس کا اقتصادی سمندری علاقہ بھی شامل ہے، میں نافذہوگا۔ چین کے سپریم کورٹ نے یہ فیصلہ ہیگ کے بین الاقوامی ٹریبونل کے اس فیصلے کے بعد کیا ہے جس میں جنوبی چین کے سمندری علاقے پر چین کی قانونی خودمختاری یا تاریخی حقوق تسلیم کرنے سے انکار کر دیا گیا ہے۔
چین نے ہیگ ٹریبونل کے اس فیصلے کو تسلیم کرنے سے انکار کر دیا تھا۔ چین کے سپریم کورٹ نے اپنے فیصلے میں جنوبی چین کے سمندر یا بین الاقوامی ٹریبونل کا ذکر نہیں کیا ہے لیکن اس کا فیصلہ چین کے علاقائی پانی کے شعبے اور اقتصادی سمندری علاقے پر اس کی خودمختاری کی نظر سے کافی اہم ہے۔
چین کے پانی کے خطے میں داخل ہونے والوں کو چینی حکومت گرفتار کر کے جیل بھیج سکتی ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: China court warns against illegal fishing in riposte to south china sea ruling in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply