برطانوی وزیر اعظم ٹریزا مے کی ایک اور شکست ، پارلیمنٹ نے دوسری بار بریکزٹ معاہدہ مسترد کیا

لندن: بریگزیٹ معاملہ پر وزیر اعظم ٹریزا مے کو اس وقت ایک اور شکست فاش ہوئی جب پارلیمنٹ نے کسی معاہدے کے بغیر 29مارچ سے پہلے یورپی یونین سے نکلنے کی نئی تحریک 149ووٹ سے مسترد کر دی۔

اس سے قبل15 جنوری 2019کو بھی یہ تحریک230ووٹوں سے ناکام ہو گئی تھی۔ اس وقت اس کی مخالفت میں432اور موافقت میں202ووٹ ہی آئے تھے۔اس وقت ٹریسا مے کی اس شکست کو یو کے کی حالیہ سیاسی تاریخ میں اب تک کی سب بڑی شکست قرار دیا جارہا تھا۔

دوسری بار پیش کیے جانے کے بعد منگل کے روز اراکین نے اس معاہدے کو 242 کے مقابلے میں 391 ووٹ سے مسترد کر دیا۔ بریگزٹ معاہدے پر ممبران پارلیمنٹ کی ووٹنگ سے پہلے برطانوی وزیرِ اعظم ٹریزا مے نے کہا تھاکہ وہ اس معاہدے پر ’لازمی قانونی‘ تبدیلیوں کے حصول میں کامیاب رہی ہیں۔

تاہم یورپی کمیشن کے صدر ڑان کلاؤڈ جنکر نے متنبہ کیا تھا کہ اگر اس ڈیل کو ووٹنگ میں شکست ہوئی تو تیسرا موقع نہیں ملے گا۔‘اس شکست کی روشنی میں حزب اختلاف لیبر پارٹی کے قائد جرمی کوبین نے عام انتخابات کرانے کا مطالبہ کر دیا تاکہ برطانوی عوام ایسی حکومت منتخب کر سکیں جو بریگزٹ کے آئندہ مرحلہ میںان کی قیادت کرسکے۔

دریں اثنا یورپی یونین نے یہ کہتے ہوئے کہ بروسلز اڑیل ممبران پارلیمنٹ کو منانے کے لیے ٹریسا مے کو مزید مہلت نہیں دے سکتے انتباہ دیا کہ کوئی بریکزٹ معاہدہ نہیں ہوگا۔یورپی کونسل کے صدر ڈونالڈ ٹسک کے ایک ترجمان نے کہا کہ اس نتیجہ پر انہیں افسوس ہے لیکن بلجیم کانقطہ نظر پیش کرتے ہوئے یہ بھی انتباہ دیا اب مزید رعایت نہیں کی جاسکتی۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: British parliament rejects brexit deal for second time in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.