شام میں باغیوں کے علاقہ میں زہریلی گیس حملہ کے پس پشت بشار الاسد کا ہاتھ : برطانوی وزیر خارجہ

بروسلز:برطانوی وزیر خارجہ بورس جانسن نے کہا ہے کہ اب تک دستیاب تمام شواہد اس امر کی غمازی کر رہے ہیں کہ شام میں باغیوں کے زیر کنٹرول علاقہ میں زہریلی گیس کے استعمال کے پس پشت شامی صدر بشار الاسد کا دماغ کارفرما ہے۔انہوں نے یہ الزام بھی عائد کیا کہ شام میں جنگ اور حالات کی خرابی کے اصل ذمہ دار خود بشار الاسد ہیں۔
غیر ملکی ذرائع ابلاغ کے مطابق بروسلز میں منعقدہ ایک بین الاقوامی کانفرنس میں خطاب کے دوران برطانوی وزیر خارجہ نے کہا کہ شام میں ۴ لاکھ شہریوں کے قتل کی ذمہ داری بشار الاسد پر عائد ہوتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ برطانیہ اپنے اس موقف پر قائم ہے کہ بشار الاسد کو اقتدار سے دستبردار ہونا ہی پڑے گا۔برطانوی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ شام میں کسی عبوری حکومت کے قیام کے بعد صدر بشار الاسد اقتدار میں نہیں رہ سکتے۔ انہیں حکومت اپنے مخالفین کے حوالے کرنا ہوگی۔
انہوں نے کہا کہشام میں انسانی ہمدردی کے تحت کی جانے والی امدادی کارروائیاں جاری رہنی چاہئیں نیز اقوام متحدہ میں شامی تنازعے کے سیاسی حل کی کوششیں کی جانی چاہئیں۔دوسری جانب بعض یورپی تجزیہ نگاروں نے برطانوی وزیر خارجہ کے بیان کو غیر حقیقت پسندانہ قرار دیا ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Boris johnson no evidence to suggest syria chemical attack was done by anyone but assad in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply