بنگلہ دیش سپریم کورٹ سے جماعت اسلامی لیڈر میر قاسم کی سزائے موت کے خلاف اپیل خارج، پھانسی کسی بھی وقت متوقع

ڈھاکہ:بنگلہ دیش سپریم کورٹ نے جماعت اسلامی کے رہنما میر قاسم علی کی طرف سے ان کے خلاف جنگی جرائم کے لئے دی گئی سزائے موت معاف کرنے کی اپیل مسترد کردی اور اب انہیں کسی بھی وقت پھانسی دی جا سکتی ہے۔
سپریم کورٹ نے گذشتہ مار چ میں میڈیا کے کبھی بہت بڑے کاروبار ی رہے اورجماعت اسلامی کو مالی امداد فراہم کرنے والے اہم افراد میں سے ایک 63سالہ میر قاسم علی کی پھانسی کی سزا کو برقرار رکھا تھا۔ ان کے خلاف 1971میں بنگلہ دیش کی جنگ آزاد ی کے دوران قتل ، لوگوں کو جبراً قید میں رکھنے‘ ایذا پہنچانے اور مذہبی منافرت بھڑکانے کا الزام عائد کیا گیا تھا۔
چیف جسٹس سریندر کمار سنہا کی طرف سے مسٹر قاسم علی کی درخواست مسترد کردئے جانے کے بعد اٹارنی جنرل محبوب عالم نے نامہ نگاروں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اگر وہ صدر سے رحم کی درخواست نہیں کرتے ہیں تو فیصلہ پر عمل درآمد کرتے ہوئے انہیں کسی بھی وقت پھانسی دی جاسکتی ہے۔
ابھی یہ نہیں معلوم ہوسکا ہے کہ میر قاسم علی صدر سے رحم کی اپیل کریں گے یا نہیں۔ خیال رہے کہ وزیر اعظم شیخ حسینہ نے 2010میں جنگی جرائم کا مقدمہ چلانے کے لئے خصوصی ٹریبونل قائم کیا تھا۔ اس فیصلے کے خلاف ملک بھر میں احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ اب بھی جاری ہے۔ اپوزیشن جماعتوں کے علاوہ دنیا بھر کی حقوق انسانی کی تنظیموں نے اس ٹریبونل کی مخالفت کی ہے۔
ان کا کہنا ہے کہ شیخ حسینہ نے یہ ٹریبونل سیاسی انتقام لینے کے لئے قائم کیا ہے تاہم حکومت ان الزامات کو مسترد کرتی ہے۔ حقوق انسانی کے گروپوں کا کہنا ہے کہ ٹریبونل کا طریقہ کار عالمی میعار پر کسی بھی طرح پورا نہیں اترتا ہے تاہم حکومت کا کہنا ہے کہ بہت سے بنگلہ دیشی اس ٹریبونل کے حامی ہیں۔ عدالت کے تازہ فیصلے کے بعد ڈھاکہ میں اضافی سیکورٹی فورسیز تعینات کردی گئی ہے۔
ماضی میں جماعت کے رہنماوں کو سزا ئے موت دینے کے فیصلے کے بعد بڑے پیمانے پر تشدد کے واقعات رونما ہوئے تھے جن میں سینکڑوں افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Bangladesh court upholds death sentence of islamist leader convicted of war crimes in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply