شمالی بغداد میں خودکش کار بم دھماکہ21 ہلاک

بغداد:عراق کے دارالخلافہ بغداد کو اس وقت ایک اور دہشت گردانہ حملہ جھیلنا پڑا جب شہر کے شمال میں ایک رہائشی علاقہ کاظمیہ میں،جو کہ شیعہ اکثریتی علاقہ ہے، پیر کی صبح ایک خودکش حملہ آور نے اپنی کار دھماکے سے اڑادی جس میں کم سے کم 21 افراد ہلاک اور35دیگر زخمی ہوگئے۔ مرنے والوں میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں جو ایک منی بس میں سوار تھے۔
یہ اطلاع پولیس اور اسپتال کے ذرائع نے دی۔ جائے وقوع پر موجود ایک پولیس عہدیدار نے بتایا کہ زیاد تر افراد اپنی گاڑیوں کے اندر ہلاک ہوئے۔ یہ لوگ قصبہ خلیس میں داخل ہونے کا انتظار کررہے تھے۔ اس نے مزید بتایا کہ ابھی بھی گاڑیوں میں جلتی ہوئی لاشیں موجود ہیں۔ ان میں ایک منی بس بھی ہے جو عورتوں اور بچوں سے بھری ہوئی تھی۔ ا دولت اسلامیہ فی العراق و الشام (داعش) نے اس حملہ کی ذمہ داری قبول کر لی۔
اس دوران میڈیکل ذرائع نے زخمیوں کی سنگین حالت کے پیش نظر اموات میں اضافہ ہونے کا اندیشہ ظاہر کیا ہے۔دریں اثنا عراقی وزیراعظم حیدر العبادی پر ملک میں سلامتی کی صورتحال کو بہتر بنانے کے لئے زبردست دباؤ ہے۔ واضح رہے کہ اسی مہینہ وسطی بغداد میں ایک خودکش حملہ میں جس کی ذمہ داری بھی داعشنے قبول کی تھی 292 افراد ہلاک ہوئے تھے۔
یہ حملہ 2003 میں امریکہ کی قیادت میں ہونے والے حملے کے بعد کے بدترین دہشت گردانہ حملوں میں سے ایک تھا۔ داعش 2014 میں قبضہ کئے گئے اپنے زیادہ تر علاقوں سے ہاتھ دھوچکا ہے اور عبادی نے اس سال شمالی شہر موصل پر جسے ایک طرح سے داعش کا دارالحکومت تصور کیا جاتا ہے، بازیاب کرالینے کا عہد کیا ہے۔(رائٹر)

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: At least 21 killed in baghdad suicide blast in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply