مجوزہ جنگ بندی منصوبہ پر عمل آوری مشکل : بشار الاسد

دمشق: شام کے صدر بشار الاسد نے یہ کہہ کر اس ہفتہ کے اواخر میںجنگ بندی کے لیے بین الاقوامی کوششوں پر پانی ڈال دیا کہ اس پر عمل آوری دشوار ہوگی۔ گذشتہ جمعہ کوایک ہفتہ کے اندر نام نہاد ” جنگ و جدل بند کرنے“ کے حوالے سے میونخ میں عالمی رہنماو¿ں کے پیش کردہ جنگ بندی منصوبہ پر جنگ میں گھرے شامی صدر کی جانب سے پہلا کوئی تبصرہ سامنے آیا ہے۔اسد نے دمشق میں ٹیلی کاسٹ کیے گئے اپنے بیان میں کہا کہ وہ چاہتے ہیں کہ ایک ہفتہ کے اندر جنگ بندی ہو جائے۔کون تمام تقاضے و شرائط ایک ہفتہ کے اندر پورے کر سکتا ہے؟ کوئی نہیں۔ ان کے بیانات میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ دہشت گردوں سے کون بات کرے گا؟ اگر کوئی دہشت گرد گروپ جنگ بندی سے انکارکر دے اس کی ذمہ داری کون لے گا؟ اسد نے کہا کہ جنگ بندی کا مطلب یہ نہیں ہو سکتا کہ ہر شخص اپنے ہتھیاروں کا استعمال بند کر دے گا۔انہوں نے مزید کہا کہ جنگ بندی کا مطلب تمام دہشت گردوں کو اپنی پوزیشنیں مضبوط کرنے سے روکنا ہے۔ہتھیاروں ،سازو سامان ،دہشت گردوں کی منتقلی یا ٹھکانوں کو مضبوط کرنا سبھی کچھ ممنوع قرار دے دیا جانا چاہیے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Assad says proposed syria ceasefire difficult in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply