سلامتی دستوں کی کارروائی میں کابل میں پولس چوکی پرحملہ کا کلیدی ملزم قاری شفیق ہلاک

کابل: افغانستان کے دارالخلافہ کابل میں ایک پولس چوکی پر ہلاکت خیز حملہ کااصل ملزم سلامتی دستوں کی کارروائی میں ہلاک ہو گیا۔

وزارت داخلہ کے ایک ترجمان نصرت رحیمی نے کابل میں میڈیا کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ سلامتی دستوںکی کارروائی میں دوغا باد تھانہ چوکی پر حملہ کے پس پشت کارفرما دہشت گرد ہلاک ہو گیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ بعد ازاں طالبان کے ایک لیڈر نے مہلوک انتہا پسندکی شناخت یہ کہتے ہوئے قاری شفیق کے طور پر کی کہ کابل کے دوغا باد پولس چوکی پر حملہ کی سازش اسی نے رچی تھی۔

رحیمی نے مزید کہا کہ سلامتی دستوں نے ورداک صوبہ میں کارروائی کر کے متعدد انتہاپسندوں کو ہلاک کردیا ان ہلاک شدگان میں قاری شفیق بھی شام ہے ۔رحیمی کے مطابق سلامتی دستوں نے یہ کارروائی چار روز پہلے کی تھی۔

واضح ہو کہ 19مئی کو طالبان انتہاپسندوں کے ایک گروپ نے کابل شہر کے دوغاباد علاقہ میں واقع ایک پولس چوکی پر حملہ کر دیا تھا۔مسلح طالبان نے اس حملہ میں 3پولس اہلکاروںکو ہلاک اور چھ دیگر کو زخمی کر دیا تھا۔اور یہ واردات انجام دینے کے فوراً بعد جائے وقوعہ سے فرار ہو گئے تھے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Architect of deadly attack on kabul police check killed in armed forces operation in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.