آنگ سووکی کے وفادار وین مئینٹ میانمار کے نئے صدر منتخب

بنکاک:میانمار کی پارلیمنٹ نے بدھ کے روز 66سالہ سیاستداں وین مئینٹ کو ملک کا صد منتخب کر لیا۔اسکے اتھ ہی یہ بھی حتمی طور پریقینی ہو گیا کہ اس عہدے پر ایک بار پھر ملک کی اصل رہنما آنگ سان سوو کی کا ایک وفادار ہی فائز ہوا ہے۔
مسٹر وین مئنٹ نے، جو کہ ایوان زیریں میں اسپیکر تھے، 636میں سے 403ووٹ ملے۔تکون مقابلہ میں دیگر دو نائب صدر مئینٹ سوے اور نائب صدر ہنری وان تھیو انتخابی دنگل میں تھے۔
مسٹر مئینٹ نے گزشتہ بدھ کو اسی روز جس روز صدر ہتین کیاؤ عہد صدارت سے دستبردار ہو گئے تھے،اپنے عہدے سے استعفےٰ دے دیا تھا۔ان کے استعفے اور وین مئینٹ کے انتخابی میدان میں کود پڑنے کوسیاسی حلقوں میں حکمراں نیشنل لیگ فار ڈیموکریسی (این ایل ڈی)کی ایک گہری چال سے تعبیر کیا جارہا ہے۔جبکہ کہا جاتاہے کہ مسٹر ہتین کیاؤ نے خرابی صحت کی بناءپر استعفیٰ دیا ہے۔
مسٹر وین مئنٹ این ایل ڈی کی فیصلہ ساز باڈی کے رکن اور ایک سابق وکیل ہیں۔وہ1990میں الیکشن جیت کر پارلیمنٹ میں پہنچے تھے لیکن حکمراں جونتا نے ان کے انتخاب کو تسلیم نہیں کیا تھا۔
2012کے ضمنی انتخاب میں وہ پارلیمنٹ میں واپس آگئے اوراسی الیکشن میں محترمہ سووکی بھی پارلیمنٹ پہنچ گئیں۔2015کے بھی عام انتخابات میں جیتنے کے بعد وین مئینٹ کو ایوان کا اسپیکر مقرر کر دیا گیا۔

Title: another suu kyi ally becomes president in myanmar | In Category: دنیا  ( world )

Leave a Reply