نائجیریائی فوج نے سیکڑوں شیعہ مسلمانوں کو ہلاک کر دیا:ایمنسٹی

لندن: ایمنسٹی انٹرنیشنل نے کہا ہے کہ نائجیریا کی فوج نے گذشتہ سال دسمبر میں صرف دور روز کی کارروائی کے دوران ساڑھے تین سو سے زائد شیعہ مسلمانوں کو گولیوں سے بھون ڈالا۔ ایمنسٹی کے مطابق ان شیعہ ہلاک شدگان میں بوڑھے مرد عورتیں اور بچے تک شامل ہیں۔ ایمنسٹی نے اپنی رپورٹ میں مصنوعی سیارے سے لی گئی ان تصاویروں کو بھی پیش کیا ہے جن میں اجتماعی قبر دکھائی گئی ہے۔ایک عینی شاہد یوسف نے بتایا کہ فوجیوں نے تحریک اسلامی کے کمپاو¿نڈ میں واقع ایک عارضی اسپتال کو بھی نذر آتش کر دیا۔اس نے یہ بھی بتایا کہ جو شدید زخمی ہو گئے تھے اور بھاگ نہیں سکتے تھے وہ زندہ جل گئے۔ اس نے کہا وہ سمجھتا ہے کہ کئی افراد اس طرح جل کر ہلاک ہوئے ہیں۔ایمنسٹی نے کہا کہ اس نے فروری2016میں تحقیقات کی تھیں اور اس دوران اس نے مبینہ متاثرین اور ان کے لواحقین،عینی شاہدین،وکلاءاور طبی عملہ سمیت92لوگوں کے انٹرویو کیے ۔دوسری جانب فوج نے کہا کہ یہ جلد بازی میں تیار کی گئی قطعاً یکطرفہ اور جانبدارانہ رپورٹ ہے۔ایمنسٹی کی رپورٹ نائجیریا کے شمال میں واقع زاریا شہر کے ان واقعات پر مبنی ہیں جہاں فوج نے کہا تھا کہ تحریک اسلامی نے فوجی سربراہ لیفٹننٹ جنرل تکور بروتائی کے قافلہ کو روک کر انہیں ہلاک کرنے کی کوشش کی تھی۔دوسرے روز فوج نے بتایا کہ اس نے اس طبقہ سے تعلق رکھنے والی کئی عمارتوں پر چھاپے مارے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Amnesty accuses nigerian army of mass killings of shias in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply