القاعدہ کی حلیف تنظیم المرابطون نے مالی خود کش حملہ کی ذمہ داری لی

گاؤ (مالی): دہشت گرد تنظیم القاعدہ کے شمالی افریقی حلیف انتہا پسندگروپ المرابطون نے دعویٰ کیاہے کہ مغربی افریقی ملک مالی کے شمالی شہر گاؤ میں فوجی کیمپ کے قریب بدھ کی شام میں جو خود کش حملہ ہوا ہے وہ اس کے فدائین دستہ کے خود کش بمباروں نے کیا ہے۔ اس کار بم دھماکہ میں کم از کم67 افراد ہلاک اور 100 سے زائد ا دیگر زخمی ہو گئے۔
المابطون نے ایک بیان جاری کر کے کہا کہ یہ کارروائی فرانس سے تعاون کرنے کی پاداش میںکی گئی ہے۔ واضح رہے کہ مرنے والوں میں پانچوں حملہ آور بھی شامل ہیں۔ فوج کے ترجمان دیارین کونے نے بتایا کہ سال کے اب تک کے اس سب سے بڑے دھماکے میں 100 سے زائد افراد زخمی ہو گئے ہیں۔ ایک مقامی شہری نے کہا، ”یہ بہت خوفناک ہے۔ جا بجا انسانی اعضاءبکھرے اور خون کے ڈوبرے تھمے ہیں۔
ترجمان نے بتایا کہ یہ خودکش دھماکہ صبح نو بجے سے تھوڑی دیر پہلے کیا گیا اور اس وقت وہاں 600 فوجیوں کو جمعہونا تھا لیکن ان حملہ آوروں نے وہاں موجود لوگوں پر اپنی گاڑیاں چڑھادیں اور اس کے بعد خود کش دھماکے ہوئے۔ اس کیمپ سرکاری فوجیوں اور مختلف مسلح باغی گروپوں کی رہائش گاہیں تھیں۔ یہ سب یہاں پر مشترکہ طور پر گشت بھی لگاتے تھے۔
مالی کے صدر ابراہیم ابو بکر کیتا نے تین دن کے قومی سوگ کا اعلان کیا ہے۔ فرانس کے وزیر داخلہ برونو لیراکس نے اسے ’زیادہ اور وسیع علامتی دھماکہ‘ بتایا۔ انہوں نے صدر فرانسواں اولاند کے ساتھ ایک دن پہلے ہی اس علاقے کا دورہ کیا تھا۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Al qaeda says mali attack punishment for cooperation with france in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply