نیا امیر منتخب ہوتے ہی طالبان نے امن مذاکرات مسترد کر کے لڑائی جاری رکھنے کا عہد کیا

کابل: افغان طالبان کا نیا امیر منتخب ہونے کے بعد ملا ہیبت اللہ اخون زادہ ک نے امن مذاکرات کو افغان بغاوت ختم کرنے کا واحد دائمی حل تسلیم کرنے سے انکار کر دیا اور اس عہد کا اعلان کیا کہ جنگ جاری رہے گی۔
پشتو میں جاری اور طالبان کمانڈروں کے ذریعہ تقسیم کیے گئے ایک صوتی پیغام میں ہیبت اللہ نے کہا کہ طالبان کسی کے آگے سر نہیں جھکائیں گے ا ور امن مذاکرات پر تیار نہیں ہوں گے۔ہیبت اللہ نے مزید کہا کہ لوگ سمجھتے ہیں کہ ملا اختر منصور کی ہلاکت سے طالبان خوف زدہ ہو جائیں گے اور ہتھیار ڈال دیں گے۔
لیکن ہم دنیا کو بت دینا چاہتے ہیں کہ ہم آخری سانس تک لڑائی جاری رکھیں گے۔واضح رہے کہ امریکہ اور افغانستان کی حکومتوں نے ملا منصور کی موت پر راحت کا سانس لیتے ہوئے اعلان کیا تھا کہ ملا منصور امن عمل کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ تھے اور انہوں نے ہی اس سال ہونے والے امن مذاکرات میں شرکت کرنے سے انکار کر کے اس امن عمل کو رکوا دیا تھا۔اور امن عمل کو آگے بڑھانے کے بجائے انہوں نے افغان جنگ میں اور بھی شدت پیدا کر دی تھی۔

Title: afghan taliban reject peace talks vow to continue fighting | In Category: دنیا  ( world )

Leave a Reply