افغانستان میں ارتھی جلوس کے دوران اشرف غنی مردہ باد کے نعرے

کابل: گذشتہ روز خود کش حملے میں ہلاک ہونے والوں کے آخری رسوم ادا کرنے کے لیے ارتھی لے جاتے وقت اقلیتی سکھ اور ہندو فرقہ کے افراد کے چہرے مضمحل تھے اور وہ سب غم و غصہ سے نڈھال نظر آرہے تھے۔

خود کش حملہ میں ہلاک ہونے والوں کے آخری رسو م میں شامل لوگ ”اشرف غنی مردہ باد“ اور افغان حکومت مردہ باد کے نعرے لگا رہے تھے ۔ہلاک شدگان میں شامل پارلیمانی الیکشن کے امیدوار اوتار سنگھ خالصہ کے بیٹے نریندر سنگھ نے اپنے والد کا جسد خاکی لیتے ہوئے اے ایف پی کو بتایا کہ اس حملہ میں ہمارے بہت سے بزرگ جو افغانستان سے بے پناہ محبت کرتے تھے،مارے گئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ حکومت کو ہماری کوئی پروا نہیں۔کبھی ہم بھی ایک بڑی تعداد میں تھے لیکن ہم میں سے بہت سے افغانستان سے چلے گئے۔اس خود کش بمباری کی داعش نے ذمہ داری قبول کی ہے۔سنگھ نے کہا کہ ان کا قافلہ جیسے ہی صوبائی گورنر کے کمپاؤنڈ کے باہر پہنچا وفد کو باہر ہی روک لیاگیا اور ان حکم دیا گیاکہ وہ کار سے باہر آجائیں اور کار کی تلاشی دیں۔

اسی دوران ایک پیدل خود کش بمبار ہمارے درمیان آگیا اور اس نے خود کو دھماکہ سے اڑالیا۔جوگندر سنگھ نے،جن کے بھائی اس حملہ میں ہلاک ہوئے ہیں، کہا کہ ان ہلاک شدگان کے لواحقین اور دوست احباب نے کابل کی گلیوں میں جمع ہو کر اپنے غم و غصہ کا اظہار کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

جس میں شہریوں کی حفاظت کرنے میں حکومت کی نااہلی پر اپنے غصہ کا اظہارکریں گے۔انہوں نے کہا کہ اب انہیں اس حکومت سے کسی قسم کی توقع نہیںہے۔اور ہم ناامید ہو چکے ہیں۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Afghan sikhs hindus grieve after suicide attack kills 19 in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply