کابل کی جیل میں قید طالبان کو کسی بھی وقت پھانسی دی جاسکتی ہے

کابل: حکومت افغانستان کے چیف ایکزیکٹیو عبداللہ عبداللہ نے اس عزم کا اظہارکیا ہے کہ کابل کے پل چرخی جیل میں قید طالبان کے ساتھ عدل کیاجائے گا اور اسی کی روشنی میں سزاپر عمل آوری ہوگی جس سے طالبان لیڈروں میں خوف و ہراس کی لہر دڑ گئی ہے۔
طالبان قیدیوں کی ممکنہ سزائے موت کے حوالے سے استفسار کیے جانے پر عبداللہ عبداللہ نے کہا کہ کئی معاملات میں سزائے موت کے حکم کی تعمیل کی جائے گی۔ تاہم انہوں نے یہ نہیں بتایا کہ فی الحال جیلوں میں کتنے قیدی ہیں اور ان میں سے کتنے قیدیوں کو پھانسی دی جائے گی۔
یہ بات اس وقت سامنے آئی جب دو شنبہ کو طالبان نے دعویٰ کیا کہ حکومت افغانستان کابل کے پل چرخی جیل میں قید طالبان گروپ سے تعلق رکھنے والے کئی قیدیوں کو پھانسی چڑھانے پر غور کر ہی ہے۔
طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے ایک بیان میں کہاکہ افغان حکام نے اتوار سے پل چرخی سے قیدیوں کو دوسری جگہ منتقل کرنا شروع کر دیا ہے۔اور ایسی اطلاعات موصول ہوئی ہیں کہ ان میں سے جن کا تعلق طالبان سے ہے حکومت انہیں پھانسی دینے کا منصوبہ بنا رہی ہے۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Abdullah vows justice as likely execution of inmates spark panic among taliban in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply