فلسطینی اتھارٹی کو’ایک مملکت تصفیہ‘ قبول : فلسطینی رہنما

لندن: فلسطینی اتھارٹی کے چیرمین محمود عباس کے نائب نے دعویٰ کیا ہے کہ فلسطینی اتھارٹی کو مملکت میں سب کو مساوی درجہ کی شرط پر ”ایک مملکت حل“ قبول ہے لیکن اسرائیل اسے تسلیم نہیں کرتا۔لندن سے شائع ہونے والے الشرق الاوسط روزنامہ سے بات کرتے ہوئے محمود و العالولنے کہا کہ ہم ہر معاملہ پر عجلت میں کوئی فیصلہ نہیں کرتے۔
مثال کے طور پر اسرائیلی شرائط پر ”ایک مملکت حل“ کی تجویز پیش کی جائے یعنی ایک ایسا ملک جہاں ایک نسل پرست حکومت بر سر اقتدار لائی جائے تو ہم اسے مسترد کر دیں گے۔ تاہم ہم اس ضمن میں پہل کرنے والے پہلے فریق ہیں جو ایک مملکت کا حل اس بنیا پر چاہتا ہے جہاں جمہوری حکومت ہو اور سب کو یکساں اور مساوی حقوق و درجہ حاصل ہو۔کوئی اول دوئم درجہ کا شہری نہ ہو۔
انہوں نے کہاکہ لیکن یہ بدقسمتی نہیں توکیا ہے کہ اسرائیل ایک خالصتاً یہودی ریاست چاہتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ وہ یہ مطالبہ کر رہا ہے کہ ہم یہودی مملکت کو تسلیم کریں۔

Read all Latest world news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from world and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Abbas deputy we accept one state solution in Urdu | In Category: دنیا World Urdu News

Leave a Reply