حیدر آباد دکن میں دمہ کے مریضوں کا زندہ مچھلی نگلوا کرعلاج کرنے کا پروگرام شروع

حیدرآباد :دمہ کے مریضوں کو زندہ مچھلی نگلوا کر علاج کرنے کا پروگرام آج شہر حیدرآباد کے نمائش گراونڈ نامپلی میں شروع ہوا۔ اس دو روزہ پروگرام کے لئے حکومت کی جانب سے وسیع انتظامات کئے گئے ہیں۔ اس دو اکے استعمال کے لئے ملک کے کئی علاقوں سے لوگ شہر حیدرآباد کا رخ کرتے ہیں۔ محکمہ مچھلی پالن کی جانب سے چھوٹی مچھلیوں کی فراہمی کا انتظام کیا گیا ہے۔بھگدڑ سے بچنے کے لئے مناسب اقدامات کئے گئے ہیں کیونکہ اس علاجکے لئے ہزاروں کی تعداد میں لوگ جمع ہوتے ہیں۔ ایک اندازہ کے مطابق تقریبا 1.5لاکھ افراد کو کچی مچھلی نگلوائی جائے گی۔باتھنی ہری ناتھ گوڑ خاندان کے زیر اہتما یہ مچھلی نگل علاج کیام جاتا ہے۔
دمہ کے مریضوں کو مچھلی میں دوا کھلانے کا کام باتھنی گوڑ خاندان 1840سے کر رہا ہے جبکہ موجودہ گوڑ اپنے خاندان کی چوتھی نسل سے تعلق رکھتے ہیں۔ مچھلی نگلوانے کےلیے نمائش گراونڈ پر 32کاونٹرس لگائے گئے ہیں۔ خواتین،معذورین،ضعیف افراد ، اہم شخصیتوں کے لئے علیحدہ کاونٹرس لگائے گئے ہیں۔یہ مچھلی نگل علاج کرانے کے لئے ایک دن پہلے ہی اترپردیش،مہاراشٹر،کرناٹک ،چھتیس گڑھ ،اوڈیشہ سمیت دیگر علاقوں کے افراد حیدرآباد پہنچ گئے۔ سنٹرل زون کے ڈی سی پی جوئیل ڈیوس نے کہا ہے کہ ہجوم پر قابو پانے کے لئے تقریبا ایک ہزار پولیس ملازمین کو مقرر کیا گیا ہے۔
وزیر افزائش مویشیاں ٹی سرینواس یاد و نے آج صبح نمائش میدان پہنچ کر انتظامات کا جائزہ لیا۔ انہوں نے مریضوں میں مچھلی میں دوا بھی تقسیم کی۔ اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ کئی برسوں سے مچھلی میں دوا کی تقسیم کا کام کیا جارہا ہے۔اس سلسلہ میں حیدرآبا داپنی تاریخ رکھتا ہے جہاں اس دوا کے استعمال کے لئے ملک اور بیرونی ممالک سے لوگ حیدرآباد آتے ہیں جن کے لئے حکومت کی جانب سے مناسب انتظامات کئے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس دوا کو کھانے آنے والوں کو دقتوں اور پریشانیوں سے محفوظ رکھنے کے لیے وزیراعلیٰ کے چندرشیکھر راو کی ہدایت پر بہترین انتظامات کو یقینی بنایا گیا ہے ۔

Read all Latest viral stories news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from viral stories and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Magical fish remedy in hyderabad in Urdu | In Category: وائرل خبریں Viral stories Urdu News

Leave a Reply