ڈی آر ایس سے سب کو یہ پتہ چلتا ہے کہ فیصلہ صحیح ہوا ہے یا نہیں:وراٹ کوہلی

موہالی: (یو این آئی) ہندستانی ٹیسٹ کپتان وراٹ کوہلی نے موجودہ ہند انگلینڈ ٹیسٹ سیریز میں استعمال کیا جا رہا امپائر کے فیصلے کا جائزہ نظام ( ڈی آر ایس) کے استعمال پر اطمینان ظاہر کیا ہے۔وراٹ نے ڈی آر ایس پر اپنا رخ واضح کرتے ہوئے کہاکہ میرا ایسا خیال ہے کہ ڈی آر ایس یہ طے کرنے کا ایک طریقہ ہے کہ سب کو یہ پتہ چلے کہ فیصلہ صحیح ہوا ہے یا نہیں۔امپائر کا فیصلہ سب سمجھتے ہیں کیونکہ انہیں ہی فیصلہ کرنے کا کام سونپا گیا ہے اور ڈی آر ایس نظام میں بھی اس کا احترام ہوتا ہے۔مجھے لگتا ہے کہ یہ صحیح ہے۔کافی لوگ اسے سمجھتے نہیں۔
کپتان نے میدانی امپائر کی حمایت کرتے ہوئے کہاکہ اگر میدانی امپائر نے فیصلہ کیا ہے تو یقینی طور پر فائدہ اسے ہی دیا جانا چاہئے کہ اس کے فیصلہ لینے کے دوران سوچ کیا تھی اور پھر ڈی آر ایس ان کے لئے گئے اس خاص فیصلے کی تصدیق کرتا ہے۔یہ پوچھے جانے پر کہ آپ اس سے خوش ہیں، وراٹ نے کہاکہ ہاں، میں اس سے خوش ہوں۔ یہ صرف میدانی امپائر کے فیصلے کی تصدیق کرنے کے لئے کیا جاتا ہے اور اگر آپ فیصلے کو چیلنج کرنا چاہتے ہیں تو آپ کے پاس یہ اختیار ہے کہ آپ اسے دوبارہ سے دیکھ سکتے ہیں۔مجھے لگتا ہے کہ کھیل کے لئے یہ صحیح ہے۔
ہندستان نے ڈی آر ایس کا استعمال کرتے ہوئے اب تک صرف دو ہی ٹیسٹ میچ کھیلے ہیں لیکن ہندستانی کپتان کا کہنا ہے کہ اس بات کا اندازہ کرنا مشکل ہے کہ ہندستانی ٹیم نے ڈی آر ایس کا کتنا حق استعمال کیا ہے۔قابل ذکر ہے کہ وشاکھا پٹنم میں کھیلے گئے دوسرے ٹیسٹ میں دونوں ٹیموں نے 21 بار ڈی آر ایس کو استعمال کیا تھا۔کپتان نے کہاکہ مجھے لگتا ہے کہ اس پر ہمیں صبر برقرار رکھنے کی ضرورت ہے۔ڈی آر ایس کا استعمال کرتے ہوئے ٹیم نے اب تک دو ہی ٹیسٹ کھیلے ہیں اور اتنی جلدی میں اس کا اندازہ نہیں کر سکتا۔تقریبا ایک سال کی مدت میں ہم اس کا جائزہ لیں گے کہ گزشتہ ایک سال میں ہم نے اس کا کتنا استعمال کیا ہے۔

Read all Latest sports news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from sports and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Virat kohli happy with decision review system in Urdu | In Category: کھیل Sports Urdu News

Leave a Reply