ٹیم انڈیا کو 18رنز سے ہرا کر نیوزی لینڈورلڈ کپ کے سیمی فائنل میں داخل

مانچسٹر:28گھنٹے اور24منٹ پر محیط سیمی فائنل میں ٹیم انڈیا کو شکست دے کر نیوزی لینڈ ورلڈ کپ کے فائنل میں داخل ہو گیا۔بارش کے باعث ریزرو ڈے میں پہنچنے کے بعد پچ کی اصلیت اسی وقت بے نقاب ہو گئی تھی جب نیوزی لینڈ نے دوسرے روز47ویں اوور کی دوسری گیند سے اپنی ادھوری اننگز 5وکٹ پر 211رنز سے آگے بڑھانا شروع کی تو محض4اووروں کے کھیل میں ہندوستان کے فاسٹ اٹیک کے خلاف اس کے3 بلے باز صرف28رنز کا اضافہ کر کے آؤٹ ہو گئے۔ٹیم انڈیا نے بھی جب 240ہدف کا تعاقب شروع کیا تو اس کا آغاز نیوزی لینڈ کی اننگز کے اختتام سے زیادہ بد تر رہا۔

ابھی ٹیم کا مجموعی اسکور ڈبل فیگر میں بھی نہیں پہنچا تھا کہ اس کے چوٹی کے تین بلے باز بشمول روہت اور وراٹ کوہلی آؤٹ ہو گئے۔24کے مجموعے پر جب دنیش کارتک بھی پویلین لوٹ گئے تو ہندوستانی خیمے میں مردنی چھا گئی۔اور اننگز سنبھالنے کی ذمہ داری نوجوان اور اپنا پہلا ہی ورلڈ کپ کھیلنے والے نوجوان بلے باز رشبھ پنت کے کندھوں پر آگئی اور انہوں نے اپنی بساط بھر کوشش بھی کی لیکن نیوزی لینڈ کے بولروں کا جادو جس طرح سر چڑھ کر بول رہا تھا اس نے رشبھ پنت کو بھی سنبھلنے کا موقع نہیں دیا اور اسکور میں ابھی 47رنز کا ہی اضافہ ہو سکا تھا کہ پنت لیفٹ آرم اسپن بولر سینٹنر کا شکار ہو گئے ۔محض71رنز پر آدھی ٹیم کے ڈھیر ہوجانے کے بعد 92کے اسکور پر ہندوستان کی ایک اور امید ہاردیک پانڈیا بھی داغ مفارقت دے گئے۔

لیکن پنت اور پانڈیا جیسے ناتجربہ کاروں کی جگہ جب ورلڈ کپ کے ساتھ ساتھ دباؤ والے میچوں میں عمدگی سے کھیلنے کا زبردست تجربہ رکھنے والے مہندر سنگھ دھونی اور رویندر جڈیجہ میدان میں اترے اور شاندار بلے بازی کرتے ہوئے اننگز کو سنبھالنے کے ساتھ اسکور میں بھی تیزی سے اضافہ کرنا شروع کیا تو ہندوستانی خیمے میں چھائی مردنی دور ہونا شروع ہو گئی اور ڈرسنگ روم میں کپتان وراٹ کوہلی، اسٹیڈیم میں موجود تماشائیوں اور براعظم انٹارکٹکا کو چھوڑ کر باقی تمام6 بر اعظموں میں مقیم ہندوستانی ٹی وی ناظرین کے چہرے دمکنا شروع ہو گئے۔اور جب ان دونوں کے درمیان چھٹے وکٹ کے لیے سنچری پارٹنر شپ ہو گئی تو ہندوستانی کرکٹ شیدائی خوشی سے جھومنے لگے لیکن قسمت کی وہ دیوی کسی کو نظر نہیں آرہی تھی جو دور کھڑی مسکرا رہی تھی ۔

اور ابھی یہ پارٹنر شپ 116رنز کی ہی ہوئی تھی کہ بولٹ نے جڈیجہ کی اننگز پر ایسا بولٹ کسا کہ ہندوستانی اننگز ہی پٹری سے اتر گئی اور ٹیم جو جانب فتح بڑھ رہی تھی بھٹک کر شکست کی راہ پر چل پڑی جو دھونی کے رن آؤٹ ہوتے ہی ایسی نڈھال ہوئی کہ ابھی منزل سے 18رنز دور تھی کہ ڈھیر ہو گئی۔جڈیجہ نے 59گیندوں پر 4چوکوں اور اتنے ہی چھکوں کی مدد سے77،دھونی نے 72گیندوں پر ایک چوکا اور ایک چھکے کی مدد سے50، ہاردک پانڈیا 62گیندوں پر دو چوکوں کی مدد سے32اور رشبھ پنت نے بھی 56بالوں پر چار چوکوں کے ساتھ32رنز بنائے۔ہندوستانی اننگز میںقابل ذکر بات یہ ہے کہ ٹیم انڈیا کے نہ صرف سات بلے باز دہائی کے ہندسے میں نہیں پہنچ سکے بلکہ وراٹ کوہلی، روہت شرما اور لوکیش راہل جیسے بہترین بلے باز ایک رن سے آگے نہ بڑھ سکے۔

نیوزی لینڈ کی طرف سے ہنری نے تین وکٹ لیے جبکہ بولٹ اور سینٹنر نے دو دو اور فرگوسن اور نیشم نے ایک ایک وکٹ لی۔ اس سے قبل نیوزی لینڈ کی طرف سے ٹیلرنے 90گیندوں پر تین چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے74،کپتان ولیمسن نے 95گیندوں پر 6چوکوں کے ساتھ67 اور نکولس نے 51گیندوں پر 28رنز بنائے اور اس کے لیے انہوں نے دو چوکوں کا سہارا لیا۔ہندوستان کی طرف سے بھونیشور کمار تین وکٹ لے کر کامیاب بولر رہے جبکہ بومرا، پانڈیا، جڈیجہ اور چاہل کو ایک ایک وکٹ ملی۔ہنری کو مین آف دی میچ قرار دیا گیا۔

Read all Latest sports news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from sports and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: New zealand in final despite thrilling jadeja dhoni counter attack in Urdu | In Category: کھیل Sports Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.