پاکستانی فاسٹ بولرمحمد آصف قومی ٹیم میں واپسی کیلئے پرعزم

لاہور: پاکستانی کرکٹ ٹیم کے سزا یافتہ تیز گیند باز محمد آصف گھریلو کرکٹ میں عمدہ کارکردگی کے توسط سے نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کے خلاف کرکٹ سریزکیلئے قومی ٹیم میں شامل ہونے کیلئے پرعزم ہیں۔ انہوں نے اگلے سیزن کو اپنے لیے انتہائی اہم قرار دیتے ہوئے کہا ’میں واپس آنا چاہتا ہوں اور اچھے اور عالمی معیار کی کرکٹ کھیلنا چاہتا ہوں لہٰذا مجھے سخت محنت کی ضرورت ہے“۔
پاکستان اور انگلینڈ کے درمیان چھ سال بعد دوبارہ لارڈز کے تاریخی میدان میں اترنے تیار ہیں جہاں فی الحال سب کی نظروں کا محور اسپاٹ فکسنگ میں سزا یافتہ محمد عامر ہوں گے۔چھ سال قبل 2010 کے لارڈز ٹیسٹ میں کپتان سلمان بٹ اور ساتھی کھلاڑی محمد آصف کے ساتھ اسپاٹ فکسنگ میں ملوث محمد عامر کو پابندی کے ساتھ ساتھ جیل جانا پڑا تھا۔
لیکن عامر سزا کی تکمیل کے بعد پاکستانی ٹیم میں واپسی کے بعد اب پہلی مرتبہ ٹیسٹ کرکٹ میں بھی واپسی کر رہے ہیں۔ایک ایسے موقع پر جب عامر لارڈز ٹیسٹ کی تیاریوں میں مصروف ہیں، ان کے سابق ساتھی محمد آصف نے عامر کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کاش میں بھی عامر کے ساتھ کھیل سکتا۔ آصف نے مزید کہا کہ عامر نے جو کارنامے پہلے انجام دیے وہ ان کا اعادہ کر سکتے ہیں۔
انگلش کنڈیشنز ان کیلئے بہت مددگار ہوں گی۔وہ مجھے بہت یاد آتی ہیں۔”میں انگلستان کی فضا اور ماحول میںکھیلنا چاہتا ہوں۔ میں دونوں جانب سوئنگ کرا سکتا ہوں۔کوئی سنچری پارٹنر شپ کرلیتا ہے لیکن اچانک مطلع ابر آلود ہو جاتا ہے اور وہ بولرجو ابھی تک وکٹ کے لیے ترس رہا ہوتا ہے اچانک ہی گیند کی موومنٹ شروع ہوجانے سے دیکھتے ہی دیکھتے پانچ چھ وکٹ حاصل کر لیتا ہے۔
23 ٹیسٹ میچوں میں 106 وکٹیں لینے والے آصف پر جب پیسوں کے لالچ میں جان بوجھ کر نوبال کرنے کے الزام میں پابندی عائد کی گئی اس وقت وہ دنیا کے دوسرے بہترین بالر تھے۔آصف کی پابندی کا خاتمہ تو گزشتہ سال ہو گیا تھا لیکن ان پر عالمی کرکٹ کے دروازے اب تک نہیں کھلے اور موجودہ حالات کو دیکھتے ہوئے ایسا جلد ہوتا ممکن نظر نہیں آتا۔(یو این آئی)

Read all Latest sports news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from sports and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: I wish i was facing england with amiresays mohammad asif in Urdu | In Category: کھیل Sports Urdu News

Leave a Reply