پاکستانیوں کی فیلڈنگ وکیچنگ کے مایوس کن مظاہرے اوروارنر کی شاندار سنچری کی مدد سے آسٹریلیا 41رنز سے جیتا

ٹانٹن: کیچ ڈراپ کرنے کی آصف علی کی ہیٹ ٹرک سمیت سات کیچ ٹپکانے ، شعیب ملک اور بابر اعظم کے ذریعہ رن آؤٹ کے دو موقع گنوانے اور بولروں کی صحیح استعمال کرنے میں بری طرح ناکام رہنے کے بعد افتتاحی بلے بازامام الحق کی نہایت سست بلے بازی کی بدولت پاکستان آسٹریلیا کے خلاف اپنا ایک اہم میچ41رنز سے ہار گیا۔ 308رنز ہدف کے تعاقب میں تیسرے ہی اوور میں پاکستان افتتاحی بلے باز فخر زماں اور 11ویں اوور میں بابر اعظم کی قیمتی وکٹوں سے ہاتھ دھو بیٹھا ۔لیکن محمد حفیظ نے نمبر چار کے بلے باز کا کردار بخوبی نبھاتے ہوئے امام الحق کے ساتھ تیسرے وکٹ کے لیے 80رنز کی پارٹنر شپ کر کے اسکور136تک پہنچا کر میچ کا پلڑا پاکستان کے حق میں کیا ہی تھا کہ صرف چار اووروں میں امام الحق،وہ خود، شعیب ملک اور آصف علی کو کمنز اور رچرڈسن نے پویلین کی راہ دکھا کر میچ کا پلڑا پھر آسٹریلیا کے حق میں جھکا دیا۔

کیونکہ جس وقت آصف کی شکل میں پاکستان کو چھٹا جھٹکا لگا تو اس وقت پاکستان ہدف سے میلوں دور تھا اور اس کی میچ میں واپسی کے امکانات دور دور تک نظر نہیں آرہے تھے۔لیکن وہاب ریاض اور حسن علی نے آر پار کا انداز اختیار کر کے بلا ہوا میں گھمانا شروع کر دیا اور اسکور میں کچھ ایسا تیزی سے اضافہ ہونا شروع ہوا کہ پاکستان کی میچ میں واپسی کے امکانات پھر ظاہر ہونا شروع ہو گئے۔لیکن وہ آسٹریلیا ہی کیا جو آسانی سے گھٹنے ٹیک دے۔

اسٹارک نے وہاب کو بیک فٹ پر کھیلنے پر مجبور کیا اور وکٹ کیپر نے کیچ لپک کر اپیل کی لیکن امپائر نے ناٹ آؤٹ قرار دیا۔ڈی آر ایس لینے کی مہلت میں ایک منٹ باقی تھا کہ فنچ نے کیپر اور بولر سے گہری مشاورت کے بعد ڈی آر ایس مانگ لیا۔گیند ان کے جسم سے بہت دور تھی اور جو آواز تھی وہ یقیناً بلے کی ہی رہی ہوگی اسی لیے تیسری آنکھ نے میدانی امپائر کے فیصلہ کو پلٹ دیا اور پاکستان بھی میچ میں واپسی کی راہ سے پلٹ گیا ۔وہاب نے 39گیندوں پر دو چوکوں اور تین چھکوں کی مدد سے45، حسن نے 15گیندوں پر 3چوکوں اور تین ہی چھکوں کی مدد سے32اور دونوں نے8ویں وکٹ کے لیے64گیندوں پر 64رنز ہی بنا کر ٹیم کے چوٹی کے بلے بازوں کو جتایا کہ اگر میچ جیتنے کی امنگ سے کھیلا جائے تو اس طرح کی اننگز اور پارٹنر شپ سے ہی میچ جیتا جا سکتا ہے۔

امام الحق نے 75گیندوں پر7چوکوں کے ساتھ53، بابر اعظم نے 28گیندوں پر 7چوکوں کے ساتھ30، محمد حفیظ نے 49بالوں پر تین چوکوں اور ایک چھکے کے ساتھ46اور سرفراز نے 48گیندوں پر 40رنز بنائے اور صرف ایک چوکا لگایا۔آسٹریلیا کی طرف سے کمنز نے تین وکٹ لیے جبکہ اسٹارک اور رچرڈسن کو دو دو اور کولٹر نائیل اور فنچ کو ایک ایک وکٹ ملی۔اس سے قبل ٹاس ہار کر بیٹنگ کے لیے مدعو کیے جانے والے کپتان آرون فنچ نے پاکستانی فیلڈروں کے ہاتھوں ملنے والے پانچ موقعوں کا بھرپور فائدہ اٹھاتے ہوئے 84بالوں پر چھ چوکوں اور چار چوکوں کی مدد سے82رنز کی اننگز اور ساتھی افتتاحی بلے باز ڈیوڈ وارنرن کے ساتھ پہلی وکٹ کی رفاقت میں146رنز بنا کر ایسی بنیاد ڈالی کہ مڈل آرڈر کو اس پر 300سے زائد رنا کی دیوار چننے میں کوئی پریشانی نہیں ہوئی۔

وارنر نے97کے نجی اسکور پر سلپ اور تھرڈ مین پر آصف علی کے ہاتھوں کیچ ٹپکائے جانے کا فائدہ اٹھاتے ہوئے سنچری مکمل کر لی ۔انہوں نے111گیندوں پر 11چوکوں اور ایک چھکے کے ساتھ107رنز بنائے۔اسمتھ نے 10، میکسویل نے دو چوکوں اور یک چھکے کی مدد سے20،شان مارش نے 26گیندوں پر دو چوکوں کے ساتھ23،کیری نے 21گیندوں پر3چوکوں کی مدد سے20اور عثمان خواجہ نے 16گیندوں پر18رنز بنائے اور تین چوکے لگائے۔ فاسٹ بولر محمد عامر5وکٹ لے کر کامیاب بولر رہے۔جبکہ شاہین آفریدی نے دو، حسن علی، وہاب ریاض اور محمد حفیظ نے ایک ایک وکٹ لی۔

Read all Latest sports news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from sports and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: David warner hundred enough for australia as pakistan comeback falls short in Urdu | In Category: کھیل Sports Urdu News
What do you think? Write Your Comment

Leave a Reply

Your email address will not be published.