بولروں کی عمدہ کارکردگی کی بدولت ہندوستان چمپینز ٹرافی کے سیمی فائنل میں

لندن: دفاعی چمپئن ہندوستان گیند بازوں کی شاندار کارکردگی اور گبر کے نام سے معروفشکھر دھون اور کپتان وراٹ کوہلی کی جاندار نصف سنچریوں کی بدولت دنیا کی نمبر ایک ٹیم جنوبی افریقہ کو اتوار کو آٹھ وکٹ سے شکست دے کرشاہانہ انداز میں آئی سی سی چیمپئنز ٹرافی کے سیمی فائنل میں داخل ہو گیا۔ آر پارکے اس گروپ بی میچ میں دنیا کی نمبردو ٹیم ہندوستان نے شاندار بالنگ اور مستعد فیلڈنگ (تین بہترین رن آؤٹ )کا مظاہرہ کر کے جنوبی افریقہ کی اننگز 44.3 اووروں میں 191 رنوں پر سمیٹ دی۔ٹیم انڈیا کے لئے ہدف کچھ زیادہ مشکل نہیں تھا اور شکھر دھون اور وراٹ کوہلی کی ناقابل شکست نصف سنچری نے اسے مزید آسان بنا دیا۔ ہندوستان نے 38 اووروں میں دو وکٹ پر 193 رن بنا کر آسان جیت اپنے نام کرلی اور سیمی فائنل میں پہنچ گیا۔ گروپ اے سے میزبان انگلینڈ اور بنگلہ دیش پہلے ہی سیمی فائنل میں پہنچ گئے ہیں۔اگرچہ192کے ہدف کے تعاقب میں ہندوستان کو مورنے مورکل چھٹے اوور میں ہی اس وقت زبردست جھٹکا دیا جب روہت شرما20گیندوں پر محض12رنز بنا کر آؤٹ ہو گئے۔لیکن دھون کو کپتان وراٹ کوہلی کا ایسا ساتھ ملا کہ یہ دونوں محتاط انداز سے ہدف کا تعاقب کرتے رہے اور اسکور150سے پار کرا دیا ۔
لیکن 151کے مجموعی اسکور پر دھون 83گیندوں پر درجن بھر چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے78رنز بنا کر لیگ اسپنر عمران طاہر کی گیند پر آؤٹ ہو گئے۔تاہم اس وقت تک یہ جوڑی ٹیم کو ہدف کے اتنا قریب پہنچا چکی تھی کہ یوراج سنگھ اور کوہلی کو مزید کسی نقصان کے بغیر ہدف پار کرنے میں کوئی دقت محسوس نہیںہوئی۔کوہلی101بالوں پر 7چوکوں اور ایک چھلے کے ساتھ76اور یوراج سنگھ 25گیندوں پر ایک چوکے اور یک ہی چھکا لگا کر 23رنز پر غیر مفتوح رہے۔اس سے قبل ہندوستانی کپتان وراٹ کوہلی نے اوول میدان پر ٹاس جیت کر پہلے فیلڈنگ کرنے کا فیصلہ کیا۔ جنوبی افریقہ نے اچھی شروعات کی اور پہلے وکٹ کے لئے 76 رن جوڑے۔جنوبی افریقہ ایک وقت دو وکٹ پر 140 رنز بنا کر مضبوط اسکور کی طرف بڑھ رہا تھا کہ تبھی دو رنز کے وقفے میں اے بی ڈیولیرس اور ڈیوڈ ملر جیسے خطرناک بلے بازوں کے رن آؤٹ ہونے نے اس پر ایسا بریک لگایا کہ پھر جنوبی افریقہ ٹیم سنبھل نہیں پائی۔ جنوبی افریقہ نے 51 رنز کے وقفے میں اپنے آخری آٹھ وکٹ گنوا دیئے۔اس کا بہت کریڈٹ ہندوستانی گیند بازوں کو جاتا ہے جنہوں نے سری لنکا کے خلاف گزشتہ ہار سے سبق لیتے ہوئے کسی ہوئی گیند بازی کی۔
بھونیشور کمار نے 23 رن پر دو وکٹ، جسپریت بمراہ نے 28 رن پر دو وکٹ، اس میچ میں واپسی کرنے والے روی چندرن اشون نے 43 رن پر ایک وکٹ، ہاردک پانڈیا نے 52 رن پر ایک وکٹ اور رویندر جڈیجہ نے 39 رن پر ایک وکٹ لیا۔جنوبی افریقہ نے وکٹوں کے درمیان اپنے پیروں پر خود کلہاڑی مارنے کا کام بھی کیا۔کپتان ڈیولیرس 16، ڈیوڈ ملر ایک اور آخری بلے باز عمران طاہر ایک رن بنا کر رن آؤٹ ہوئے اور جنوبی افریقہ کی پوری ٹیم 44.3 اوور میں آؤٹ ہو گئی۔ کوئنٹن ڈی کوک (53) اور ہاشم آملہ (35) نے جنوبی افریقہ کو ا چھا اسٹارٹ دیا۔دونوں نے پہلے وکٹ کے لئے 17.3 اوور میں 76 رن جوڑے۔اس شراکت سے ایسا لگ رہا تھا کہ جنوبی افریقہ بڑا اسکور بنائے گا۔لیکن آف اسپنر اشون آملہ کو وکٹ کیپر مہندر سنگھ دھونی کے ہاتھوں کیچ کراکر ہندستان کو میچ میں واپس آنے کا موقع دیا۔ آملہ نے 54 گیندوں کی اننگز میں تین چوکے اور ایک چھکا لگایا۔ اشون پہلے دو میچوں میں آخری الیون سے باہر تھے اور اس میچ میں انہیں فاسٹ بولر امیش یادو کی جگہ موقع دیا گیا۔پہلا وکٹ حاصل کرنے کے بعد ہندوستانی گیند بازوں نے جنوبی افریقی بلے بازوں پر دباؤ بنا یا۔ڈی کوک لیفٹ آرم اسپنر جڈیجہ کی گیند پر لمبی ہٹ لگانے کی کوشش میں بولڈ ہو گئے۔ہندستان کے لئے یہ زبردست کامیابی تھی۔ڈی کوک نے 72 گیندوں پر 53 رن میں چار چوکے لگائے۔
گزشتہ میچ میں صفر پر آؤٹ ہونے والے ڈی ولیرس (16) کو ہاردک پانڈیا کے شاندار تھرو پر دھونی نے رن آوٹ کر دیا۔ڈیوڈ ملر نے فاف ڈو پلیسس کی وجہ سے اپنا وکٹ گنوا دیا۔دونوں بلے باز ایک ہی سرے پر آ گئے تھے لیکن ڈو پلیسس کے پہلے کریز میں پہنچ جانے کی وجہ ملر رن آؤٹ ہو گئے۔ان دو وکٹوں نے جنوبی افریقہ کی حالت خراب کر دی۔ ڈو پلیسس 50 گیندوں میں 36 رن بنانے کے بعد پانڈیا کی گیند پر بولڈ ہو گئے۔کرس مورس (4) کا وکٹ بمراہ نے لیا۔ بھونیشور نے 43 ویں اوور میں مسلسل گیندوں پر ربادا (5) اور مورن مورکل (0) کو آؤٹ کر دیا۔طاہر کو کپتان وراٹ نے اپنے شاندار تھرو سے رن آوٹ کیا اور جنوبی افریقہ کی اننگز 191 رنز پر سمٹ گئی۔

Read all Latest sports news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from sports and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Bowlers ensure india storm into semis in Urdu | In Category: کھیل Sports Urdu News

Leave a Reply