ہندوستانی سائنس داں آبی و فضائی آلودگی کے اعداو شمار جمع کرنے کے لیے سنسر بنائیںگے

نئی دہلی:بڑے پیمانے پر پانی اور فضائی آلودگی کے اعداد و شمار جمع کرنے کے لئے سائنس اور ٹکنالوجی محکمہ (ڈی ایس ٹی ) نے کمپیوٹر ہارڈ ویئر بنانے والی کمپنی انٹیل ٹیکنالوجی انڈیا کے ساتھ ایک پروگرام کا اعلان کیا ہے جس میں دنیا بھر کے سائنسدانوں سے ایک خاص سینسر بنانے کے لئے تجاویز طلب کی جائیں گی۔ سائنس اور ٹکنالوجی محکمہ کے سکریٹری پروفیسر آشوتوش شرما نے بتایا کہ سینسر سائز میں بہت چھوٹا اور سستا ہونا چاہیے جسے کہیں بھی لگا یا جا سکے۔ اس میں ایسے چپ ہونے چاہئیں جو اعداد و شمار جمع کرنے کے ساتھ، اسے از خود دور سرور پر بھیج سکے۔ اس میں ضروری بجلی پیدا کرنے کی خود ہی صلاحیت ہونی چاہئے۔ پروگرام پانچ سال کا ہے اور اس ایک اندازے کے مطابق 33 کروڑ روپے کا خرچ آئے گا۔ ڈی ایس ٹی اور انٹیل اخراجات کا نصف بوجھ برداشت کریں گے۔ پروفیسر شرما نے کہا کہ یہ اپنی نوعیت کا دنیا کا پہلا سینسر ہوگا۔ ابھی تک دریاو¿ں کی آلودگی کی سطح معلوم کرنے کے لئے چھ سات مقامات پر بڑے بڑے آلات لگا کر اعدادوشمار جمع کیا جاتا ہے۔ ان مقامات کے درمیان بڑا فاصلہ ہونے کی وجہ سے دریا کے پورے بہاو¿ کے علاقوں کی آلودگی کے اعداد و شمار نہیں مل پاتے ہیں۔ پروگرام کے تحت جس سینسر کا تصور کیا گیا ہے اس کے سستا ہونے کی وجہ سے بڑی تعداد میں انہیں لگایا جا سکتا ہے جس سے پورے بہاو¿ کے علاقوں کے اعداد و شمار مل سکیں گے۔ یہ اعداد و شمار سرور پر حاصل ہونے کے بعد ان کا خود کار طریقے سے تجزیہ کرنے کا بھی بندوبست کریں گے۔ پروفیسر شرما نے بتایا کہ شروع میں اعداد و شمار صرف مطالعہ اور نگرانی کے لئے استعمال ہوں گے، لیکن بعد میں انہیں عام لوگوں کے لئے بھی آن لائن دستیاب کرایا جا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دو سال میں اس ٹیکنالوجی کے فروغ کا کام مکمل ہو جانے کی امید ہے۔ اگلے ایک سال میں سینسر تیار کر کے فیلڈ ٹرائل شروع کر دیا جائے گا جس سے یہ پتہ چل سکے گا کہ یہ کتنے کارگر ہیں۔ اگلے دو سال میں فیلڈ ٹرائل مکمل ہونے کی توقع ہے۔ اس طرح پانچ سال میں سینسر کی تجارتی پیداوار شروع ہو جائے گی۔ فیلڈ ٹرائل کے دوران دریائے گنگا کے اعداد و شمار جمع کرنے کے لئے سینسر کا استعمال ہو سکتا ہے۔ انٹیل ٹیکنالوجی انڈیا کے ڈائریکٹر جتندر چڈھانے کہا کہ یہ کافی دلچسپ چیلنج ہے۔ پروگرام میں ہند۔ امریکہ سائنس اور ٹیکنالوجی فورم بھی تعاون کر رہا ہے۔

Read all Latest science news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from science and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Scientists will develop a sensor to measure water and air standard in Urdu | In Category: سائنس Science Urdu News

Leave a Reply