ہندوستانی سائنسدانوں نے پانی سے چلنے والی بیٹری ایجاد کی

نئی دہلی:نیشنل فیزیکل لیبارٹری آف انڈیا (این ایف ایل ) کے سائنسدانوں نے بجلی پیدا کرنے کیلئے ایک ایسی بیٹری بنائی ہے جو پانی سے چلتی ہے۔جب تک اسے پانی کی فراہمی کی جاتی رہتی ہے، بجلی بنتی رہتی ہے۔ ڈاکٹر آر کے کوٹنالا اور ڈاکٹر جیوتی شاہ نے مل کر یہ بیٹری (سیل) بنائی ہے جسے انہوں نے ’ہائڈرو الیکٹرو سیل‘ کا نام دیا ہے۔ دنیا میں پہلی بار کسی نے پانی سے براہ راست بجلی بنانے کی ٹیکنالوجی تیار کی ہے۔ ان کی اس ایجاد کو ہندوستانی پیٹنٹ مل چکا ہے اور امریکی پیٹنٹ کا عمل آخری مرحلے میں ہے۔
ویسے تو دنیا میں گزشتہ کئی برسوں سے پانی سے توانائی پیدا کرنے پر کام چل رہا ہے، لیکن جہاں بھی لوگوں کو کامیابی ملی ہے وہ پانی کو ہائیڈروجن اور آکسیجن میں تحلیل کرنے میں ملی ہے۔اس کے بعد ہائیڈروجن کے جلنے سے توانائی پیدا کی جاتی رہی ہے۔کسی مادہ کو انتہائی باریک سوراخوں (نینو پورس) کا استعمال کرکے پانی سے براہ راست بجلی بنائی گئی ہو، ایسا پہلی بار ہوا ہے۔
دونوں سائنسدانوں نے ’یو این آئی‘ کے ساتھ انٹرویو میں بتایا کہ ان کی اس کامیابی کے پیچھے ایک خاص مادہ میگنیشیم فیرائٹ کا استعمال ہے جس کی آکسیجن جذب کرنے کی صلاحیت کافی زیادہ ہوتی ہے۔اس خوبی کی وجہ سے اس کے انتہائی بارک سوراخ سے ہو کر گزرتے وقت پانی ہائیڈروجن (پلس) آئن اور ہائڈروآکسائڈ (مائنس) آئن میں ٹوٹ جاتا ہے۔بیٹری کے اناڈ کے طور پر زنک کی پلیٹ کا استعمال کیا گیا ہے۔
اس کی دونوں سطحوں پر میگنیشیم فیرائٹ کی تہہ لگائی گئی ہے۔اس تہہ پر الیکٹراڈ کے طور پر چاندی کی لائننگ بنائی گئی ہے۔ جب اس بیٹری پر پانی ڈالا جاتا ہے تو پانی کے ایک ذرہ کی تحلیل سے پیداشدہ ہائیڈروجن آئن پانی کے دوسرے ذرہ کے ساتھ مل کرہائڈرونیم آئن بناتا ہے جبکہ ہائڈروآکسائڈ کا آئن زنک کے ساتھ مل کر زنک ہائڈرو آکسائڈ بناتا ہے اور دو الیکٹرانوں کو چھوڑتا ہے۔انہی الیکٹرانوں کے بہاؤ سے بجلی پیدا ہوتی ہے۔

Read all Latest science news in Urdu at urdutahzeeb.com. Stay updated with us for Daily urdu news from science and more news in Urdu. Like and follow us on Facebook

Title: Scientists of national physical laboratory of india invent a unique battery in Urdu | In Category: سائنس Science Urdu News

Leave a Reply